Tag Archives: تمام

مصباح الحق کو تمام فارمیٹس میں کوچنگ کی ذمہ داری دے کر بوجھ لاد دیا گیا، رمیز راجہ

کراچی(این این آئی) سابق پاکستانی کپتان رمیز راجہ نے کہا ہے کہ مصباح الحق کو تمام فارمیٹس میں کوچنگ کی ذمہ داری دے کر بوجھ لاد دیا گیا ہے۔ ایک انٹرویو میں رمیز راجہ نے کہاکہ مصباح الحق کو تمام فارمیٹس میں کوچنگ کی ذمہ داری دے کر بوجھ لاد دیا گیا ہے، میں سمجھتا ہوں کہ ٹوئنٹی 20 کھلاڑیوں کی سمت درست کرنے کیلگے ہارڈ ہٹر کوچ کی ضرورت ہے، انھوں نے کہا کہ پرانے
کھلاڑیوں کو واپس لایا گیا جو دباؤ میں پرفارم نہیں کرپائے، بابر اعظم سے اوپننگ کرانا درست نہیں تھا۔سرفراز احمد اچھی فارم میں نہیں، ان

کی جگہ حارث سہیل کو چوتھے نمبر پر بھیجنا چاہیے تھا، رمیز نے کہا کہ مختصر ترین فارمیٹ میں نوجوان کھلاڑیوں کو سامنے لانے کی ضرورت ہے، ہم نے دوسرے ٹی 20 میں صرف 2 چھکے جڑے جبکہ حریف سائیڈ کی اننگز میں 8 سکسرز شامل تھے۔



[ad_2]

حکومت نے جمعیت علما اسلام (ف)کے تمام مدارس کی فہرست مانگ لی،وزارت داخلہ کاصوبوں کو مراسلہ جاری،ہنگامی اقدامات،خفیہ ادارے متحرک

دریاخان(آن لائن)حکومت نے جمعیت علما اسلام (ف)کے تمام مدارس کی فہرست مانگ لی، مدارس میں معلمین اور طلبا کے کوائف بھی فراہم کیے جائیں، وفاقی وزارت داخلہ نے صوبوں کو مراسلہ جاری کردیا ہے ضلع بھکر سمیت تمام اضلاع میں ہنگامی طور پر کارکنان و مدارس کی فہرستیں مرتب کی جانے لگیمقامی سطح پر کارکنان کو نظر بند اور حراست میں رکھنے کا بھی عندیہ خفیہ ادارے متحرک ہوگئے
دریاخان سے بھی ڈیٹا اکٹھا کرنا شروع کردیا  گیا کے پی کے سے ملحقہ پنجاب کے تمام راستے کڑی نگرانی میں ہوں گے جن میں دریاخان ڈیرہ پل بھی شامل ہے جمعیت

علما اسلام ف کے27 اکتوبر کو احتجاجی مارچ کے اعلان کے بعد وفاقی وزارت داخلہ اور سکیورٹی ادارے بھی متحرک ہوگئے ہیں ایک طرف جمعیت علما اسلام ف کے آزادی مارچ کی تیاریاں عروج پر ہیں، دوسری جانب حکومت نے احتجاجی یا آزادی مارچ اور دھرنے کے خلاف اپنی حکمت عملی بھی بنانا شروع کردی ہے۔ سربراہ جے یوآئی ف مولانا فضل الرحمان نے اعلان کررکھا ہے کہ 27 اکتوبر کو 15لاکھ لوگ مارچ میں شریک ہوں گے اس کے پیش نظر وفاقی حکومت نے سکیورٹی انتظامات کو حتمی شکل دینے اور آزادی مارچ کا اثر زائل کرنے کیلئے اپنی حکمت عملی ترتیب دینا شروع کردی ہے۔ وزارت داخلہ نے جمعیت علما اسلام (ف) کے تمام مدارس کی فہرست مانگ لی، مدارس میں معلمین اور طلبا کے کوائف بھی فراہم کیے جائیں، وفاقی وزارت داخلہ نے صوبوں کو مراسلہ جاری کردیا ہے۔ مراسلے میں صوبوں سے جے یوآئی ف کے ملک بھر میں موجود تمام مدارس کی تعداد اور مدارس میں معلمین اور طلبا کا ڈیٹا اکٹھا کرکے فہرست مرتب کرنے کی ہدایت کردی ہے۔



[ad_2]

آزادی مارچ کی تمام تیاریاں مکمل، کوئی مائی کالال ہمیں روک نہیں سکتا،روکنے کی کوشش کی تو پھر کیا کرینگے؟جمعیت علماء اسلام نے دھمکی دیدی

کوئٹہ(آن لائن)جمعیت علماء اسلام کے مرکزی سیکرٹری جنرل وسینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا ہے کہ آزادی مارچ کی تمام تیاریاں مکمل ہوچکی ہیں آزادی مارچ سے کوئی مائی کالال ہمیں روک نہیں سکتا اسلام آبادمیں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی اور سلیکٹڈ وزیراعظم کے خلاف27اکتوبرکو آزادی مارچ ہمارا جمہوری حق ہے اورہم یہ حق استعمال کر کے رہیں گے اگر ہمارے راستے بندکرنے کی کوشش کی گئی تو اس سے پورا ملک جام ہوگا ہمارا حکومت سے اختلاف ہے
ریاستی اداروں سے نہیں اورنہ کوئی جھگڑا ہے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے کیا

مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ 27اکتوبر کو اسلام آباد میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے ساتھ ساتھ ملک میں دھاندلی زدہ انتخابات کے نتیجے میں آنے والی حکومت سے خاتمے کیلئے آزادی مارچ کاانعقاد کیا جارہا ہے اس سلسلے میں آزادی ملین مارچ کے تمام تر تیاریاں اور انتظامات مکمل ہوچکے ہیں ہمیں امیدہے کہ صوبائی حکومتیں ملین مارچ میں شرکت کیلئے آنے والے کارکنوں کی راہ میں رکاوٹیں پیدا نہیں کرینگے اگر ایسا کیا گیا تو اس سے پورا ملک جام ہوگا جو ہم نہیں چاہتے انہوں نے کہا کہ جمعیت علماء اسلام کے کارکن اور آزادی ملین مارچ کے شرکاء ہر حال میں اسلام آباد پہنچیں گے ہم نے اس سے قبل ملک بھر میں کامیاب اور پر امن 14ملین مارچ کئے ہیں پتہ نہیں اس بار کیوں حکومت بوکھلاہٹ کاشکار ہوچکی ہے اور ملین مارچ میں رکاوٹیں پیدا کرنے کی ناکام کوششیں کررہی ہیں انہوں نے کہا کہ ہمارا ریاستی اداروں سے کوئی اختلاف یاجھگڑا نہیں ہے ریاستی اداروں کے اہلکار ہمارے کارکنوں کوملین مارچ میں شرکت کرنے پر دھمکارہے ہیں ہمارا حکومت سے اختلاف ہے اداروں سے نہیں اور نہ ہی کوئی جھگڑا ہے ملین مارچ میں دیگر سیاسی جماعتوں کے کارکن اور رہنماء بھی ہمارے ساتھ اسٹیج پر شرکت کرینگے انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کے وزیر بے تدبیر ایسے ایسے بیانات دے رہے ہیں جو انتہائی اخلاقیات اور پارلیمانی زبان کے منافی ہیں مگر ہمیں ان کے اس طرح کے بیانات سے کوئی غرض نہیں کیونکہ جولوگ جیسے ہوتے ہیں
اسی مزاج کی گفتگو کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ اسلام آباد میں ملین مارچ کرنا ہمارا جمہوری حق ہے اور ہم اسے استعمال کرکے رہیں گے اور یہ حق استعمال کرنے سے ہمیں کوئی مائی کا لال روک نہیں سکتا انہوں نے کہا کہ ہمارا اسلام آباد کا آزادی مارچ بھی پرامن ہوگاخیبر پختونخوا کے سلیکٹڈ وزیراعلیٰ نے قافلے کے روکنے کی جوبات کی اس پر میں یہ کہتا ہوں کہ چھوٹا منہ اور بڑی بات وہ ہمارے کارکنوں کو روک نہیں سکتے اگر ایسا کیا گیاتو ان کی اپنی حکومت جام ہوکررہے گی انہوں نے کہا کہ ایک طرف تو حکومت کہتی ہے کہ ملک میں جمہوریت ہے جب جمہوریت ہے تو پھر کس بات کا خوف ہے ہمیں ہمارے آئینی حق سے کوئی نہیں روک سکتا۔



[ad_2]

میری یاسین ملک سے شادیکیسے ہوئی ، تمام تر صورتحال کو جانتے ہوئےہاں کیوں کی ؟ مشعال ملک نے خود ہی بتا دیا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے مشعال ملک نے کہا کہ شادی سے پہلے یاسین ملک نے کہا تھا کہ میری زندگی بس صرف جدوجہد ہے لیکن میں نے ان کے ساتھ زندگی گزارنے کا فیصلہ کیا۔ 2005 میں میری والدہ مشرف دور میں سیاست میں فعال تھیں اور اسی دوران میری یاسین ملک سے ملاقات ہوئی اور میں انہیں پسندآ گئی۔ اللہ تعالیٰ نے مجھے ان کے لیے چنا تھا
یہ میرے لیے اعزاز کی بات ہے۔مشعال ملک کی والدہ ریحانہ ملک نے کہا کہ ہم نے اپنے بچوں کو بھی پابند نہیں کیا اور بچوں

کو اپنا فیصلہ کرنے میں مکمل آزادی دی۔ مشعال ملک نے تمام تر صورتحال کو جانتے ہوئے یاسین ملک سے شادی کا فیصلہ کیا۔انہوں نے کہا کہ ہم خطرے سے لڑنے والے لوگ ہیں اور مجھے کبھی ایسا خوف نہیں ہوا کہ میں نے اپنی بچی کو آگ میں جھونکا۔ ہمیں امید ہے کشمیر ضرور آزاد ہو گا۔‎



[ad_2]

عمران خان کی تمام اپیلیں کسی کام نہ آئیں ،آزادی مارچ لائن آف کنٹرول عبور کرنے کیلئے چل پڑا، بھارتی فوج کی جانب سے شدیدفائرنگ اوربھاری گولہ باری کا خدشہ

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیر اعظم عمران خان کی تمام اپیلیں نظر انداز،آزاد کشمیر سے ہزاروں افراد قافلوں کی شکل میں مظفر آباد پہنچ گئے ۔ یہ آزادی مارچ جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ (جے کے ایل ایف) کی کال پر شروع کیا گیا جس میں اعلان کیا گیا ہے کہ اس کے شرکاء چکوٹھی سے لائن آف کنٹرول عبور کریں گے۔
تاہم یہ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ اس مارچ کے شرکاء پر بھارتی فوج کی جانب سے فائرنگ اور گولہ باری کی تیاریاں کر لی گئی ہیں۔مظفر آباد پہنچنے والے شرکاء آج اپراڈہ کے مقام پر جمع ہوئے جس

کے بعد انہوں نے پیدل سیز فائر لائن کی جانب مارچ شروع کر دیا ہے۔ اس مارچ کا مقصد مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کے نفاذ اور انسانیت سوز مظالم پر عالمی دنیا کی توجہ مبذول کروانا ہے۔اس آزادی مارچ کی خاص بات یہ ہے کہ اس میں صرف جوان مرد ہی نہیں بلکہ بزرگ، خواتین اور بچے بھی شریک ہیں۔دوسری جانب پاکستانی سیکیورٹی اداروں کی جانب سے شرکاء کو لائن آف کنٹرول کی طرف بڑھنے سے روکنے کے لیے حکمت عملی ترتیب دے دی گئی ۔ کمشنر مظفر آباد ڈویژن کا کہنا ہے کہ مارچ کرنے والے شرکاء کو لائن آف کنٹرول کے قریب جانے کی اجازت نہیں دے سکتے کیونکہ شرکاء پر بھارتی فوج کی فائرنگ اور گولہ باری کا خدشہ ہے جس سے بہت سی انسانی جانوں کا ضیاع ہو سکتا ہے۔انتظامیہ کی جانب سے جلوس کے شرکاء سے بھی اپیل کی جا رہی ہے کہ وہ لائن آف کنٹرول کے قریب جانے سے گریز کریں ۔یاد رہے کہ اس سے پہلے وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اہلِ کشمیر کی مدد یا جدوجہد میں ان کی حمایت کی غرض سے جو بھی آزاد کشمیر سے ایل او سی پار کرے گا، وہ بھارتی بیانیے کے ہاتھوں میں کھیلے گا۔
سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں وزیرِ اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ میں مقبوضہ کشمیر میں 2 ماہ سے جاری غیر انسانی کرفیو میں گھرے کشمیریوں کے حوالے سے آزاد کشمیر کے لوگوں میں پایا جانے والا کرب سمجھ سکتا ہوں۔انہوں نے کہا ہے کہ اہلِ کشمیر کی مدد یا جدوجہد میں ان کی حمایت کی غرض سے جو بھی آزاد کشمیر سے ایل او سی پار کرے گا وہ بھارتی بیانیے کے ہاتھوں میں کھیلے گا۔ وزیرِ اعظم نے مزید کہا کہ وہ بیانیہ جس کے ذریعے پاکستان پر ’اسلامی دہشت گردی‘ کا الزام لگا کر ظالمانہ بھارتی قبضے کے خلاف اہلِ کشمیر کی جائز جدوجہد سے توجہ ہٹانے کی کوشش کی جاتی ہے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ ایل او سی پار کرنے سے بھارت کو مقبوضہ وادی میں محصور لوگوں پر تشدد بڑھانے اور جنگ بندی لکیر کے اس پار حملہ کرنے کا جواز ملے گا۔



[ad_2]

’’عمران خان وزیر اعظم جیسے عہدے کے قابل نہیں‘‘ بھارت تمام سفارتی آداب بھول بیٹھا، کیا کچھ کہہ دیا ؟پاکستانیوں میں غصے کی لہر دوڑ گئی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)عمران خان کو بین الاقوامی سفارتی آداب نہیں آتے اور وہ وزیر اعظم جیسے عہدے کے قابل نہیں ہیں۔بھارتی وزارت خارجہ کے ترجمان نے معمول کی بریفنگ میں ایک سوال کے جواب میں یہ تبصرہ کیا۔مسٹر خان کے آزاد کشمیر میں جا کر وہاں کے لوگوں کو کنٹرول لائن تک مارچ کرنے سمیت مختلف تبصرو ں کے سلسلے میں بھارت کے موقف کے بارے میں پوچھے جانے پر مسٹر کمار نے کہا کہ پہلی بار ان کے اس طرح کے بیان نہیں آئے۔
عمران خان نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں جس طرح کی اشتعال انگیز تقریر کی

اور جس قسم کی زبان کا استعمال کیا، بھارت اس کی سخت الفاظ میں مذمت کرتا ہے۔ادھر ترجمان بھارتی دفتر خارجہ رویش کمار ترکی اور ملائیشیا کی جانب سےکشمیر پر بھارتی مظالم و بربریت کیخلاف آواز اٹھانے پر تلملا اٹھے اور کہاکہ یہ  ہمارا اندرونی معاملہ ہے،یاد رہے کہ اقوام متحدہ کے اجلاس میں ترکی اور ملائیشیا نے مقبوضہ کشمیر کے عوام کیلئے آواز اٹھائی تھی ۔



[ad_2]

بھارت نے جنگی تیاری مکمل کر لی، پہلی بار لاہور کے قریب امرتسر میں جنگی طیارے تعینات، سرحد کے قریب تمام ہوائی اڈوں پر بھی جنگی طیارے پہنچ گئے

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) بھارت پر جنگ کا بھوت سوار ہو گیا، بھارت نے تمام جنگی تیاریاں مکمل کرلی ہیں، بھارتی آرمی چیف اور بھارتی حکومت کے وزراء پاکستان کو بار بار جنگ کی دھمکی دیتے آ رہے ہیں، اس حوالے سے بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ پاکستان سے جنگ کی بھارت نے تیاریاں مکمل کرلی ہیں، بھارتی میڈیا کا یہ بھی کہنا ہے کہ پہلی بار بھارتی تاریخ میں لاہور کے قریب واقع شہر امرتسر میں جنگی طیارے تعینات کئے گئے ہیں،
اس کے علاوہ پاکستان کی سرحد کے قریب قریب جتنے ہوائی اڈے ہیں وہاں بھارتی فضائیہ نے

اپنے جنگی طیارے پہنچا دیے ہیں۔ بھارتی میڈیا کا یہ بھی دعوی ہے کہ بھارتی فوج سرحدی علاقوں میں بھاری ہتھیار بھی پہنچا چکی ہے، دوسری جانب پاک فوج بھی الرٹ ہے اور بھارت کی کسی بھی کارروائی کا منہ توڑ جواب دینے کے لیے تیار بیٹھی ہے، واضح رہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہیاور کشمیری بھائیوں کے حق خودارادیت پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل اصف غفور کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیر صدارت پاک فوج کے ہیڈکوارٹرز(جی ایچ کیو) میں کورکمانڈرز منعقد ہوئی جس میں جیو اسٹرٹیجک، قومی سلامتی اور مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا، کانفرنس میں پاکستان کو غیرمستحکم کرنے کی غیرملکی سازشوں سے نمٹنے کی کوششوں کی تعریف بھی کی گئی ہے جب کہ اقوام متحدہ میں تنازع کشمیر موثر طور پر اجاگر کرنے کو تسلیم کیا۔کورکمانڈر کانفرنس میں اس عزم کا اعادہ کیا گیا کہ کسی بھی قسم کی بھارتی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیاجائے گااوربھارتی کمانڈرزکی جانب سے غیر ذمے درانہ بیانات کا بھی جارحانہ جواب دیا جائے گا۔اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ پاک فوج مادروطن کے دفاع کے لئے مکمل تیار ہے اور ملک کی عزت، وقار اور سلامتی کا ہر قیمت پر دفاع کیا جائے گا، کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور بہادر کشمیری بھائیوں کے حق خودارادیت پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا۔



[ad_2]

آپکے تمام مسائل حل ہو جائینگے بس حکومت مخالف قوتوں کی حمایت نہ کریں ، آرمی چیف کی کاروباری شخصیات سے درخواست ،جانتے ہیں آگے سے تاجروں نے جنرل باجوہ کو کیا جواب دیا؟

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)گزشتہ شب ملک کی سرکردہ کاروباری شخصیات نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کی جو رات دیر تک جاری رہی۔بزنس کمیونٹی نے آرمی چیف کو معاشی جمود سے آگاہ کیا ، تاجروں اور کاروباری شخصیات کی شکایات سن کر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ پاکستان سے ہمیں محبت ہے۔
کاروباری لوگوں نے پاکستان کے لیے جو خدمات اور قربانیاں دی ہیں اس سے سب آگاہ ہیں۔آپ کی کوششوں سے ہی ملک چلے گا۔آرمی چیف نے کہا کہ آپ کی پریشانیاں سن کر مجھے انتہائی ہمدردی ہے اور میں ان کے حل

کے لیے ہر ممکن کوشش کروں گا۔انہوں نے تاجروں کے وفد سے کہا کہ آپ حکومت سے مکمل تعاون کریں اور حکومت مخالف کسی بھی قوت کی حمایت نہ کریں۔آپ کے مسائل حل کیے جائیں گے۔دریں اثنا آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ قومی سلامتی کا ملک کی معیشت سے براہ راست گہرا تعلق ہے ۔ سیکورٹی صورتحال بہتر کرنے کے کیلئے اقتصادی ترقی نا گزیر ہے پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید کی زیر میزبانی میں آرمی آڈیٹوریم میں معیشت اور سیکیورٹی کے باہمی اثر و نفوذ کے عنوان سے سیمینار کا انعقاد ہوا جس میں حکومت کی معاشی ٹیم اور ملک کے تاجروں نے شرکت کی۔آئی ایس پی آر کے مطابق سیمینار کے انعقاد کا مقصد ہم آہنگی کو فروغ دینے کے لیے تجاویز تیار کرنا تھا۔سیمینار سے خطاب میں آرمی چیف کا کہنا تھا کہ قومی سلامتی کا تعلق معیشت سے ہے اور ملک میں داخلی سیکیورٹی کی صورتحال میں بہتری آئی ہے ۔
جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ سیکیورٹی صورتحال میں بہتری کے اقتصادی سرگرمیوں پر اثرات مرتب ہوئے ہیں اور ان مباحثوں کا مقصد تمام فریقین کو ایک پلیٹ فارم پر مہیا کر نا ہے جبکہ پلیٹ فا رم کی تجاویز سے مربوط حکمت عملی وضح کرنے میں مدد ملے گی ۔آئی ایس پی آرکے مطابق حکومت کی اقتصادی ٹیم نے تاجروں کو کاروبار میں آسانی کیلئے اقدامات سے آگاہ کیا۔ حکومتی ٹیم نے کہا کہ قومی معیشت میں استحکام کی کوششوں کے حوصلہ افزا نتائج آرہے ہیں۔ آئی ایس پی آرکے مطابق تاجروں نے کاروبار ی ماحول کو مزید بہتر بنانے کے لئے تجاویز شیئرکیں۔ تاجروں نے یقین دہانی کرائی کہ حکومت سے اصلاحات کے نفاذ میں تعاون کریں گے، ٹیکس ادا اور سرمایہ کاری کرکے اپنا کردار ادا کریں گے ۔



[ad_2]

سات سو سال تک تمام سرفہرست سائنس دان مسلمان تھے، انگریزوں نے سوچ سمجھ کر مسلمانوں کا نظام تعلیم ختم کیا،عمران خان :مدارس کے طلبا کیلئے زبردست اعلان کردیا

اسلام آباد ( آن لائن ) وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ 700 سال تک تمام سرفہرست سائنس دان مسلمان تھے، انگریزوں نے سوچ سمجھ کر مسلمانوں کا نظام تعلیم ختم کیا، ہمارے تعلیمی نظام کو بڑی محنت سے تباہ کیا گیا،دین اسلا م ہمیں دنیا میں آنے کا مقصد بتا تا ہے ۔
تفصیلات کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں دینی مدارس کے زیر تعلیم طلبا میں تقریب تقسیم انعامات ہوئی، تقریب کے مہمان خصوصی وزیر اعظم عمران خان تھے ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمارے نبی نے سب

سے زیادہ زور تعلیم پر دیا، نبی کریم نے کہا تعلیم کے لیے چین بھی جانا پڑے تو جائیں، قیدیوں کی رہائی کے لیے بچوں کو تعلیم دینے کی شرط رکھی گئی۔وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ اسلام نے ذہنوں میں ڈال دیا تھا کہ تعلیم کے بغیر معاشرہ ترقی نہیں کر سکتا، 700 سال تک تمام سرفہرست سائنس دان مسلمان تھے۔ انگریزوں نے مدارس کو دیے جانے والے فنڈ قابو کر لیے، انگریزوں نے سوچ سمجھ کر مسلمانوں کا نظام تعلیم ختم کیا، انگریزوں کے تعلیمی نظام نے طبقات پید ا کیے ۔انہوں نے کہا کہ نظام تعلیم ختم ہوا تو مسلمان نیچے گئے، ناانصافی ہے ایک طرف انگریزی، اردو میڈیم اور تیسری طرف مدارس ہیں، اسلام اور تعلیم ساتھ ہوتے تو قوم کو انسانیت کی طرف لے کر جاتے ہیں، ناانصافی ہے کہ ایک ملک میں 3 نظام تعلیم چل رہے ہیں۔ ہم نے فیصلہ کیا کہ مدارس کے طلبا کو بھی مواقع دیے جائیں۔وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ راہ حق کے بارے میں صرف تعلیم بتاتی ہے، پاکستان واحد ملک تھا جو اسلام کے لیے بنا تھا۔
غلبہ اسلام کے بعد 30 سال میں مسلمان وسط ایشیا تک پہنچ گئے، ہمیں بچوں کو پڑھانا چاہیئے کہ مسلمان پوری دنیا پر کیسے چھا گئے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ شاعر مشرق علامہ اقبال نے مغربی تعلیمات کا مقابلہ کیا اور برصغیر کے اہل علم لوگوں کو اپنی طرف راغب کیا علامہ اقبال نے تمام مغربی فلسفوں اور اسلام کی تاریخ کا مطالعہ کیا اور دور حاضر کی سماجی، اخلاقی، سماجی، اقتصادی اور سیاسی خرابیوں کا کھل تبصرہ کیا۔
اس موقع پر وزیراعظم نے وفاقی وزیر برائے تعلیم شفقت محمود کو نیشنل کریکولم کونسل کے قیام پر خراج تحسین پیش کرتے ہو ئے کہا کہ نظریہ اقبال کو نصاب کا حصہ بنائیں تاکہ وہ تمام معاشروں کے بارے میں بہتر آگاہی کے حامل ہوں اور اپنی کمزوریوں اور صلاحیت کا ادرک رکھتے ہوں ۔انہو ں نے مزید کہا کہ مقبوضہ کشمیر ایک جیل ہے، 80 لاکھ لوگوں کو بند کر دیا گیا ہے۔ مل کر فیصلہ کیا کہ الجزیرہ اور بی بی سی طرز کا انگریزی چینل کھولیں گے۔
ٹی وی چینل کھولنے کا مقصد مسلمانوں کے خلاف پروپیگنڈے کا مقابلہ کرنا ہے۔وزیر اعظم نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ فلم اور ڈراموں کے ذریعے مسلم دنیا کے ہیروز اور تاریخ کو اجاگر کریں ، مغرب کو مسلمانوں کی اعلیٰ روایات اور تہذیب سے آگاہ کریں گے، ہمارے موجودہ تعلیمی نظام میں بچوں کی اکثریت اوپر نہیں آسکتی، ہمارے تعلیمی نظام کو بڑی محنت سے تباہ کیا گیا ہم اس کو ٓٹھیک کرنے کی مکمل کو شش کریں گے مگر اس کے لئے وقت لگے گا مگر اس نظام کو لا نے کے لئے ہم سب کو ایک ہو نا پڑے گا تا کہ ہم دنیا کو پیغام دیں سکیں کہ ہم سب ایک ہیں ۔



[ad_2]

کشمیریوں کیلئے بولنے پر ٹوئٹر کے بھارتی ملازمین تمام حدیں پار کر گئے،ایسی حرکت کر ڈالی کہ جس کی ہر پاکستانی توقع کر رہا تھا

نئی دہلی(آن لائن)مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی فوج کی جارحیت کے خلاف آواز اْٹھانے پر بھارتی ٹوئٹر ملازمین نے 4000 سے زائد پاکستانیوں کے ٹوئٹر اکاؤنٹس معطل کردیے ہیں۔ بھارتی حکومت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کو خصوصی حیثیت دینے والے آرٹیکل 370 کو ختم کرنے کے بعد سے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کا ظلم و ستم دن بہ دن بڑھتا جا رہا ہے اور اِس ظلم کے خلاف دْنیا بھر کے مسلمان مختلف طریقوں
سے آواز اْٹھا رہے ہیں۔ سوشل میڈیا صارفین سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اہلیانِ کشمیر کا ساتھ دہے رہے ہیں لیکن بھارتی ٹوئٹر

ملازمین نے اْن ٹوئٹر صارفین کے خلاف ایک مہم شروع کردی ہے جس میں وہ اْن صارفین کے ٹوئٹر اکاؤنٹس معطل کر رہے ہیں جو مودی سرکار کے خلاف بول رہے ہیں اور مقبوضہ کشمیر کا ساتھ دہے رہے ہیں۔ بھارتی ٹوئٹر ملازمین نے اب تک 4000 سے زائد ٹوئٹرصارفین کے اکاؤنٹس معطل کردیے ہیں ۔



[ad_2]