Tag Archives: کو

ایرانی خواتین کو سٹیڈیم میں میچ دیکھنے کی اجازت

تہران (این این آئی)ایران نے فٹ بال کی عالمی گورننگ باڈی (فیفا) کی دھمکی کے زیر اثر 40 برس بعد خواتین کو فٹ بال اسٹیڈیم میں جانے کی اجازت دے دی۔تفصیلات کے مطابق فیفا نے گزشتہ ماہ ایران سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ خواتین کو غیر مشروط طور پر اسٹیڈیم میں آنے کی اجازت دے۔فیفا نے دھمکی دی تھی کہ اگر تہران نے خواتین سے متعلق مثبت فیصلہ نہیں کیا تو ایران کو فیفا سے باہر کردیا جائے گا۔واضح رہے کہ فیفا کی
جانب سے مذکورہ فیصلہ اس وقت سامنے آیا جب ایک لڑکی نے اسٹیڈیم میں داخل ہونے کے

لیے لڑکوں والا لباس زیب تن کیا تاہم ان کی شناخت ظاہر ہوگئی۔بعدازاں گرفتاری کے ڈر سے لڑکی نے خود سوز کرلی تھی۔ایران کی جانب سے پابندی اٹھائے جانے کے بعد خواتین کی بڑی تعداد نے ٹکٹ خریدنے کے لیے اسٹیڈیم کا رخ کیا۔سرکاری میڈیا کے مطابق 2022 کے ورلڈ کپ کوالیفائنگ میچ ایران اور کمبوڈیا کی ٹیموں کے مابین آزادی اسٹیڈیم میں ہوگااس ضمن میں بتایا گیا حکومتی اعلان کے ایک گھنٹے بعد ہی ساری ٹکٹیں فروخت ہوگئیں۔مقامی فٹ بال جرنلسٹ روحا پوربخش نے بتایا کہ اب تک 3 ہزار 500 خواتین نے ٹکٹ خرید چکی ہیں۔انہوں نے اپنے تاثر کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مجھے یقین نہیں آتا یہ حقیقت میں بدل رہا ہے، ٹیلی ویڑن کو فٹ میچ دیکھ کر رپورٹنگ کی لیکن اب بذات خود اسٹیڈیم میں میچ دیکھوں گی۔میڈیا رپورٹ کے مطابق اسٹیڈیم میں خواتین کی علیحدہ نشستیں ہوں گی اور 150 خاتون پولیس اہلکار تعینات ہوں گی۔علاوہ ازیں 3 مارچ 2018 کو فٹ بال کی عالمی تنظیم فیفا کے سربراہ گیانی انفنٹینو نے کہا تھا کہ ایران نے انھیں یقین دلایا ہے کہ خواتین کو بہت جلد ملک میں ہونے والے مردوں کے فٹبال میچ اسٹیڈیم جا کر دیکھنے کی اجازت دی جائے گی۔ایران میں سخت اسلامی قوانین کی پاداش میں متعدد سماجی کارکنوں سمیت خواتین کھلاڑیوں کو سزائیں مل چکی ہیں۔یکم اپریل 2017 میں ایران نے چین میں
منعقدہ ایک ٹورنامنٹ میں اسلامی قوانین کی خلاف ورزی پراپنے ملک کی بلیئرڈ ٹیم کی چند خاتون کھلاڑیوں پر ایک سال کی پابندی عائد کردی تھی۔ایران کی باؤلنگ، بلیئرڈ اور باکسنگ فیڈریشن نے خلاف ورزی کی نوعیت کو واضح نہیں کیا تھا تاہم ایک سالہ پابندی کا اعلان کردیا ہے۔ایرانی حکام کے مطابق چائنا اوپن بلئیئرڈ ٹورنامنٹ کے لیے بھیجی گئی خواتین پراسلامی قواعد کی خلاف ورزی کی پاداش میں ڈومیسٹک اور تمام بیرونی مقابلوں میں
شرکت کے لیے ایک سال کی پابندی ہوگی۔ایرانی خواتین اور لڑکیوں پر 1981 میں مردوں کے کھیلوں میں شرکت پر پابندی عائد کی گئی تھی تاہم دیگر ممالک کی خواتین کو اس طرح کے میچوں میں شرکت کی اجازت دی جاتی رہی ہے۔غیرملکی میڈیاکے مطابق ایران میں کھیلوں کے میدانوں تک خواتین کی رسائی کے لیے مہم چلانے والے ایک گروپ کی جانب سے 2 لاکھ سے زائد افراد کی دستخط شدہ پٹیشن فیفا کو جمع کرادی گئی تھی۔



[ad_2]

میری فوجی ٹریننگ ہے نمٹنا جانتا ہوں، تم سب نے اتنا پیسہ بنایا ،پھر بھی روتے ہو ، آرمی چیف نے کس کاروباری شخصیت کو جھاڑ پلائی؟

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)معروف کالم نگارمحمد حنیف اپنے کالم ’’ سر باجوہ سیٹھوں سے ذرا بچ کے‘‘ میں لکھتے ہیں کہ ۔۔۔خبروں میں سنا ہے کہ کوئی پھٹ پڑا، کوئی رو پڑا، کسی نے دہائی دی، کسی نے نیب کی شکایت کی، تو کسی نے اپنی ناقدری کا رونا رویا،
کسی نے زندگی کی بےثباتی کی شکایت کی۔پاکستان کے سب سے بڑے سیٹھوں نے سپہ سالار جنرل باجوہ سے ملاقات میں ’یہ جینا بھی کوئی جینا ہے‘ ٹائپ کا ماحول بنا دیا۔یہ سپہ سالار کا ہی کمال ہے کہ وہ صبح لائن آف کنٹرول پر پہرہ دے لیتے ہیں، دوپہر کو ایک نئے

ڈی ایچ اے کا افتتاح کرتے ہیں اور رات کو پانچ گھنٹے بیٹھ کر پاکستان کے سب سے بڑے سیٹھوں کے دکھی دلوں کا مداوا بھی کرتے ہیں۔آپ کی میٹنگ میں بیٹھے ہوئے ہر سیٹھ کی دولت کا اندازہ لگائیں کوئی ارب پتی، کوئی کھرب پتی، کوئی مہا کھرب پتی مگر ہر کوئی رو رہا ہے، پھٹ رہا ہے، آپ کی تسلی کا خواہاں ہے۔اس میٹنگ سے باہر ایک قوم ہے جو بلک رہی ہے، بجلی کے بل بھرنے کے لیے تین تین نوکریاں کرنے پر مجبور ہے۔ ڈھائی کروڑ بچہ ہے جو کسی سکول کی شکل نہیں دیکھے گا۔خبروں میں رپورٹ نہیں ہوا لیکن سر باجوہ نے ہلکی سی ڈانٹ تو پلائی ہو گی کہ اس ملک سے اتنا پیسہ بنایا پھر بھی رو رہے ہو، پھٹ رہے ہو۔ اگر پھٹنا ہی ہے تو ذرا دور جا کر پھٹو۔ میری ٹریننگ فوجی ہے اور میں پھٹنے والی چیزوں سے نمٹنا جانتا ہوں۔



[ad_2]

مصباح الحق کو تمام فارمیٹس میں کوچنگ کی ذمہ داری دے کر بوجھ لاد دیا گیا، رمیز راجہ

کراچی(این این آئی) سابق پاکستانی کپتان رمیز راجہ نے کہا ہے کہ مصباح الحق کو تمام فارمیٹس میں کوچنگ کی ذمہ داری دے کر بوجھ لاد دیا گیا ہے۔ ایک انٹرویو میں رمیز راجہ نے کہاکہ مصباح الحق کو تمام فارمیٹس میں کوچنگ کی ذمہ داری دے کر بوجھ لاد دیا گیا ہے، میں سمجھتا ہوں کہ ٹوئنٹی 20 کھلاڑیوں کی سمت درست کرنے کیلگے ہارڈ ہٹر کوچ کی ضرورت ہے، انھوں نے کہا کہ پرانے
کھلاڑیوں کو واپس لایا گیا جو دباؤ میں پرفارم نہیں کرپائے، بابر اعظم سے اوپننگ کرانا درست نہیں تھا۔سرفراز احمد اچھی فارم میں نہیں، ان

کی جگہ حارث سہیل کو چوتھے نمبر پر بھیجنا چاہیے تھا، رمیز نے کہا کہ مختصر ترین فارمیٹ میں نوجوان کھلاڑیوں کو سامنے لانے کی ضرورت ہے، ہم نے دوسرے ٹی 20 میں صرف 2 چھکے جڑے جبکہ حریف سائیڈ کی اننگز میں 8 سکسرز شامل تھے۔



[ad_2]

عمران خان کے بھتیجے نے پاکستان تحریک انصاف کے وزیر کو بے نقاب کر دیا فیاض الحسن چوہان پر سنگین الزامات عائد ، تہلکہ خیز انکشافات کر دیئے

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعظم عمران خان کے بھتیجے نے ایک ویڈیو پیغام جاری کیا جس میں انہوں نے کہا ہے کہجب جہاں ظلم ، نا انصافی حد سے بڑ جائے اس کیخلاف آواز اٹھانا ضرور ی ہوجاتا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق عمران خان کے بھتیجے تحریک انصاف کے صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ میرے ان کیساتھ بڑے اچھے تعلقات ہیں
وہ میرے بھائیوں کی طرح ہیں ، انہوں نے میری کئی جگہوں پر مدد کی ہے ۔ لیکن آج مجھے یہ بیحد افسوس کیساتھ کہنا پڑا رہا ہے کہ انہوں نے پنڈی کے بدمعاش ، اسمگلرز ، جواریوں

، ٹھگ اور بھنگیوں کو پالا رکھا ہے ۔ کچھ دن قبل میں ان کے ہاتھوں بال بال بچا ہوں ۔ سات افراد پنڈی ہستپال میں زیر علاج ہیں ۔ وزیراعظم کے بھتیجے نے کہا ہے کہ جو کوئی بھی عدالتوں میں ان کیخلاف کوئی بیان دے یا ان کیخلاف کیس کرے تو یہ آکر اسے مار مار کر قیمہ بنا دیتے ہیں۔صوبائی وزیر نے جو لڑکے رکھے ہوئے ہیں یہ سب ضیاالحق کی پیدوار ہیں ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ان غنڈوں کے پیچھے فیاض الحسن چوہان کے علاوہ کسی بھی وزیر کے ملوث ہونے کا انکشاف ہوا تو ان کو بھی منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔ ہمیں نہ گولی کا ڈر ہے ، نہ موت کا اور نہ کبھی حرام کھایا ہے اور نہ کھائیں گے ۔ ان کی پراڈوز میں نہیں بیٹھتا ، نہ ان کے پیسوں کے کپڑے پہنچتا ہوں ۔ وزیراعظم کے بھتیجے نے تحریک انصاف کے لوگوں سے درخواست کی آپ ایسے کسی بھی لیڈرز کو دیکھیں جو عمران خان کے وژن کو نقصان پہنچا رہے ہیں تو ان کیخلاف بھرپور آواز اٹھائیں ، چاہے وہ آپ کا دوست ہو یا پھر کوئی قریبی ہی کیوں نہ ہوآپ اس کیخلاف آواز اٹھائیں ۔



[ad_2]

بھارتی اور اسرائیلی پائلٹس کو اس بات کا علم ہی نہیں کہ ۔۔۔!!! پاک فضائیہ کے سابق چیف سہیل امان نے 27 فروری کو پیش آنیوالے واقعہ سے متعلق بڑاانکشاف کر دیا ، پوری دنیا پاکستانی پائلٹوں کی مہارت پر دنگ رہ گئی

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان ائیرفورس کے سابق چیف سہیل امان نےبھارتی فضائیہ کی پیشہ ورانہ منصوبہ بندی اور پائلٹس کو ملنی والی تربیت پر بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی جنگی ہوا بازوں کی پیشہ وارانہ صلاحیتوں کا اندازہ ا س بات سے بخوبی لگایا جا سکتا ہے کہ ان کے ایک
روسی ایس یو 30 جنگی طیارے کو ان کے اپنے زیر کنٹرول علاقے میں 25 میل اندر پاکستانی پائلٹ نے لائن آف کنٹرول عبور کیے بغیر مار گرایا۔ ان کا کہنا تھا کہ جنگ کسی بھی مسئلے کا حل نہیں لیکن ہم ہمہ وقت دشمن کی کسی بھی جارحیت

کا منہ توڑ جواب دینے کیلئے تیار ہیں۔سابق یئر چیف سہیل امان نے مزید کہا کہ بھارتی افواج کی آپس کی کوآرڈی نیشن حال یہ ہے کہ 27 فروری کو پاکستان کی طرف سے جوابی وار نے انہیں بوکھلاہٹ کا شکار کر دیا تھا کہ اس دوران بھارت نے اپنا ہی ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر مار گرایاتھا۔ ایک سوال دہرایا جاتا ہے کہ اسرائیلی پائلٹ بھی اس آپریشن میں شامل تھا کیا کوئی اسرائیلی پائلٹ گرفتار ہوا یا نہیں ؟ سابق ائیر چیف نے اس بات پر براہ راست جواب دینے سے گریز کرتے ہوئے کہا کہ اگر اسرائیلی پائلٹ بھارت کیساتھ شامل تھے تو اس کا مطلب یہ ہوا کہ ان کی تیاری اور آپریشن کی پلاننگ کا کوئی حال نہیں ۔



[ad_2]

حکومت نے جمعیت علما اسلام (ف)کے تمام مدارس کی فہرست مانگ لی،وزارت داخلہ کاصوبوں کو مراسلہ جاری،ہنگامی اقدامات،خفیہ ادارے متحرک

دریاخان(آن لائن)حکومت نے جمعیت علما اسلام (ف)کے تمام مدارس کی فہرست مانگ لی، مدارس میں معلمین اور طلبا کے کوائف بھی فراہم کیے جائیں، وفاقی وزارت داخلہ نے صوبوں کو مراسلہ جاری کردیا ہے ضلع بھکر سمیت تمام اضلاع میں ہنگامی طور پر کارکنان و مدارس کی فہرستیں مرتب کی جانے لگیمقامی سطح پر کارکنان کو نظر بند اور حراست میں رکھنے کا بھی عندیہ خفیہ ادارے متحرک ہوگئے
دریاخان سے بھی ڈیٹا اکٹھا کرنا شروع کردیا  گیا کے پی کے سے ملحقہ پنجاب کے تمام راستے کڑی نگرانی میں ہوں گے جن میں دریاخان ڈیرہ پل بھی شامل ہے جمعیت

علما اسلام ف کے27 اکتوبر کو احتجاجی مارچ کے اعلان کے بعد وفاقی وزارت داخلہ اور سکیورٹی ادارے بھی متحرک ہوگئے ہیں ایک طرف جمعیت علما اسلام ف کے آزادی مارچ کی تیاریاں عروج پر ہیں، دوسری جانب حکومت نے احتجاجی یا آزادی مارچ اور دھرنے کے خلاف اپنی حکمت عملی بھی بنانا شروع کردی ہے۔ سربراہ جے یوآئی ف مولانا فضل الرحمان نے اعلان کررکھا ہے کہ 27 اکتوبر کو 15لاکھ لوگ مارچ میں شریک ہوں گے اس کے پیش نظر وفاقی حکومت نے سکیورٹی انتظامات کو حتمی شکل دینے اور آزادی مارچ کا اثر زائل کرنے کیلئے اپنی حکمت عملی ترتیب دینا شروع کردی ہے۔ وزارت داخلہ نے جمعیت علما اسلام (ف) کے تمام مدارس کی فہرست مانگ لی، مدارس میں معلمین اور طلبا کے کوائف بھی فراہم کیے جائیں، وفاقی وزارت داخلہ نے صوبوں کو مراسلہ جاری کردیا ہے۔ مراسلے میں صوبوں سے جے یوآئی ف کے ملک بھر میں موجود تمام مدارس کی تعداد اور مدارس میں معلمین اور طلبا کا ڈیٹا اکٹھا کرکے فہرست مرتب کرنے کی ہدایت کردی ہے۔



[ad_2]

پانامہ لیکس میں نامزد 90افراد کو ایمنسٹی سکیم میں کلیئر کئے جانے کا انکشاف،اہم سیاسی جماعت نے بڑے سوال اُٹھادیئے

فیصل آباد (آن لائن)جماعت اسلامی نے پانامہ لیکس میں نامزد 90افراد کو ایمنسٹی سکیم میں کلیئر کرنے کا فیصلہ احتساب کے ساتھ مذاق کے مترادف قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ سابقہ حکومتوں کی کرپشن اور لوٹ مار کا حساب کرنے اور لوٹی دولت واپس لانے کے نعرے لگانے والے ایک سال میں کچھ نہیں کر سکے۔
قرضوں میں کمی کا دعویٰ کرنے والوں نے قوم کو مزید قرضوں کے جال میں پھنسا دیا ہے۔ جماعت اسلامی کے صوبائی نائب امیرسردارظفر حسین خان ایڈووکیٹ نے کہاکہ وزیراعظم نے پاکستان کو مدینہ کی طرز پر اسلامی ریاست بنانے، سب کے بے لاگ

احتساب، کشکول اٹھانے پر موت کو ترجیح دینے، ایک کروڑ نوکریوں اور پچاس لاکھ بے گھر لوگوں کو گھر دینے کے بلند و بانگ دعوے کیے تھے۔ اب یہ تمام دعوے ہوا میں بکھر اور فضاؤں میں گم ہو چکے ہیں۔اقتصادی محاذ پر حکومت چاروں شانے چت ہوچکی ہے،معاشی اور اقتصادی زبوں حالی نے مہنگائی اور بے روزگاری میں اضافہ کیاہے جس کی وجہ سے عوام کے اندر سخت مایوسی اور بے چینی پائی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اپنے کسی ایک وعدے کو بھی پورا نہیں کر سکی جس کی وجہ سے حالات پہلے سے بھی بدترین ہو گئے ہیں۔ ملک غیر سنجیدہ لوگوں کے ہتھے چڑھ گیاہے، اسٹیٹس کو کی محافظ قوتوں نے ملک و قوم کے مسائل میں اضافہ کیاہے۔ حکمران عوام کو ریلیف دینے اور ملک میں استحکام لانے کی بجائے بوجھ ثابت ہوئے ہیں۔



[ad_2]

عمران خان کے اقوام متحدہ میں خطاب پر تنقید کیوں کی؟وینا ملک اور ہربھجن سنگھ سوشل میڈیا پر آمنے سامنے،ایک دوسرے کو کھری کھری سنادیں

لاہور(این این آئی)معروف پاکستانی اداکارہ وینا ملک اور سابق بھارتی کرکٹر ہربھجن سنگھ سوشل میڈیا پر آمنے سامنے آگئے اور ایک دوسرے پر طنز کے نشتر چلائے۔ہربھجن سنگھ نے وزیراعظم عمران خان کی گزشتہ ماہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے کیے گئے خطاب پر تنقید کی۔
ہربھجن نے لکھا کہ عمران خان کی تقریر میں استعمال کئے گئے الفاظ بلڈ باتھ اور آخری سانس تک لڑیں گے دونوں ممالک میں نفرت کو بڑھاوے کا باعث بنیں گے۔سابق کرکٹر نے لکھا کہ بطور سپورٹس مین عمران خان سے امن کی بات کی توقع رکھتا تھا۔اس پر وینا ملک میدان میں آئیں

اور ہربھجن کو طنزیہ انداز میں جواب دیتے ہوئے لکھا کہ وزیراعظم نے اپنے خطاب میں امن کے بارے میں بھی بات کی تھی، وزیر اعظم نے اپنی تقریر میں اس حقیقت سے پردہ اٹھایا ہے جو مقبوضہ وادی میں کرفیو اٹھنے کے بعد عیاں ہوگی۔اداکارہ نے یہ بھی لکھا کہ عمران خان نے واضح طور پر کہا تھا کہ بھارت کی جانب سے جاری جارحیت کوئی خوف نہیں بلکہ ایک خطرہ ہے اور اس سب کے بعد انہوں نے طنزیہ انداز میں بھارتی کرکٹر سے سوال کیا کہ کیا آپ کو انگریزی سمجھ نہیں آتی؟۔وینا کے جانب سے بیان کی گئی اس چبھتی سچائی کا ہربھجن سے کوئی جواب نہ بن پڑا تو انہوں نے اداکارہ کی ٹویٹ کے ٹائپو کی نشاندہی پر ہی اکتفا کرلیا۔ٹائیپو کی نشاندہی کرکے ہربھجن نے لکھا کہ غصہ نہ کریں اور انگریزی میں کچھ لکھنے سے قبل چیک ضرور کر لیا کریں۔



[ad_2]

برطانوی کمیشن نے پاکستان کو خالصتان تحریک سے بری الذمہ قرار دیدیا،تحریک کے پیچھے اصل وجوہات کیا ہیں؟ حیرت انگیز انکشافات

لندن(آن لائن) برطانوی کمیشن نے پاکستان کو سکھوں کی الگ ملک خالصتان کیلئے جاری تحریک سے بری الذمہ قراردیدتے ہوئے کہاہے کہ خالصتان تحریک کے پیچھے پاکستان کاہاتھ نہیں ہے۔سکھ برادری کا خالصتان کامطالبہ اورشدت پسندی کے خلاف برطانوی کمیشن نے اپنی رپورٹ میں کہاہے کہ خالصتان تحریک کے پیچھے پاکستان کا ہاتھ نہیں ہے۔ سکھ بھارتی پالیسیوں س خوش نہیں ہیں اوربرطانیہ میں مقیم ہندوؤں اور
سکھوں کے درمیان تناؤ ہے۔ کمیشن کے مطابق اوورسیزسکھ کمیونٹی شناخت کے حوالے سے زیادہ متحرک ہے۔کمیشن کی رپورٹ میں جائزہ لیاگیاکہ بیرون ملک مقیم سکھ خالصتان کیلئے زیادہ متحرک ہیں اور گولڈن ٹیمپل

حملے کے بعدعلیحدہ وطن کے مطالبے میں اضافہ دیکھنے میں آیاہے۔ کمیشن نے کہا کہ سکھوں کی اکثریت علیحدہ ملک کاقیام چاہتی ہے جبکہ بھارتی حکومت اورمیڈیاکارویہ سکھ علیحدگی پسندی کوہوادے رہا ہے۔



[ad_2]

میں اپنی بات پر قائم ہوں،بہت اچھاحکمران ملاہے،مجھے عمران خان کی تصاویر بھیجی جارہی ہیں،جوانی میں تو میں بھی ڈانسرتھاپھرمیری بات کیوں سنتے ہو؟توبہ کرنے والے شخص کو طعنہ دینے والے کے ساتھ اللہ کیا سلوک کرے گا؟مولانا طارق جمیل نے انتباہ کردیا

اسلام آباد(نیوزڈیسک)میں اپنی بات پر قائم ہوں،بہت اچھاحکمران ملاہے،مجھے عمران خان کی تصاویر بھیجی جارہی ہیں،جوانی میں تو میں بھی ڈانسرتھاپھرمیری بات کیوں سنتے ہو؟توبہ کرنے والے شخص کو طعنہ دینے والے کے ساتھ اللہ کیا سلوک کرے گا؟مولانا طارق جمیل نے انتباہ کردیا، تفصیلات کے مطابق معروف عالم دین مولانا طارق جمیل وزیراعظم عمران خان کی تعریف اور ان کی حمایت کرنے پر بری طرح تنقید کی زد میں آگئے ہیں، مولانا طارق جمیل نے اپنے
ایک بیان میں انکشاف کیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی تعریف کرنے پر مجھے گالیاں دی جارہی ہیں انہوں نے کہا کہ میں

نے عمران خان کے بارے میں جو کچھ بھی کہا میں آج بھی اس پر قائم ہوں، انہوں نے کہا کہ ممکن ہے عمران خان ناکام ہوجائے لیکن انہوں نے پاکستان کو ریاست مدینہ طرز کی ریاست بنانے کا ارادہ تو ظاہر کیااور میں نے اسی وجہ سے ان کی تعریف کی تھی جس پر مجھے گالیاں دی گئیں، انہوں نے کہا کہ پاکستانی بادشاہ لوگ ہیں،گدھے کو گھوڑا اور گھوڑے کو خچر بنادیتے ہیں،انہوں نے کہا کہ ہمیں اس کے لئے دعاکرنے کی ضرورت ہے، ہمیں بہت اچھا حکمران ملا ہے مولانا طارق جمیل نے انکشاف کیا کہ مجھے عمران خان کی تصاویر بھیجی جارہی ہیں، انہوں نے سوال اُٹھایا کہ کون آدمی ہے جس نے گناہ نہیں کیا؟ لوگ کہتے ہیں کہ دیکھو یہ کیا کررہاہے، انہوں نے وزیراعظم عمران خان کی ماضی کی تصاویر بھیجنے والوں اور ان پر اعتراض کرنے والوں ک وجواب دیتے ہوئے کہا کہ جوانی میں میں بھی ڈانسرتھا،سنگر بھی تھا،لوگ پھر میری باتیں کیوں سنتے ہیں؟ مجھے بھی نہ سنیں اور مجھے بھی گالیاں دیں، مولانا طارق جمیل نے انتباہ کیا کہ کون ہے جو گناہ نہیں کرتا؟ لیکن جب کوئی شخص توبہ کرلے تو پھر اسے طعنہ دینے والے کے حوالے سے اللہ تعالیٰ قسم اُٹھاتاہے کہ میں تیرے مرنے سے پہلے تجھے اس میں مبتلاکرکے ماروں گا۔ مولانا طارق جمیل نے ایک بار پھر وزیراعظم عمران خان کی حمایت کا اعادہ کیا اور کہا کہ ہمیں دعاکرنی چاہئے کہ عمران خان پاکستان کو مدینے جیسی ریاست بنانے میں کامیاب ہو۔



[ad_2]