Tag Archives: کی

ایرانی خواتین کو سٹیڈیم میں میچ دیکھنے کی اجازت

تہران (این این آئی)ایران نے فٹ بال کی عالمی گورننگ باڈی (فیفا) کی دھمکی کے زیر اثر 40 برس بعد خواتین کو فٹ بال اسٹیڈیم میں جانے کی اجازت دے دی۔تفصیلات کے مطابق فیفا نے گزشتہ ماہ ایران سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ خواتین کو غیر مشروط طور پر اسٹیڈیم میں آنے کی اجازت دے۔فیفا نے دھمکی دی تھی کہ اگر تہران نے خواتین سے متعلق مثبت فیصلہ نہیں کیا تو ایران کو فیفا سے باہر کردیا جائے گا۔واضح رہے کہ فیفا کی
جانب سے مذکورہ فیصلہ اس وقت سامنے آیا جب ایک لڑکی نے اسٹیڈیم میں داخل ہونے کے

لیے لڑکوں والا لباس زیب تن کیا تاہم ان کی شناخت ظاہر ہوگئی۔بعدازاں گرفتاری کے ڈر سے لڑکی نے خود سوز کرلی تھی۔ایران کی جانب سے پابندی اٹھائے جانے کے بعد خواتین کی بڑی تعداد نے ٹکٹ خریدنے کے لیے اسٹیڈیم کا رخ کیا۔سرکاری میڈیا کے مطابق 2022 کے ورلڈ کپ کوالیفائنگ میچ ایران اور کمبوڈیا کی ٹیموں کے مابین آزادی اسٹیڈیم میں ہوگااس ضمن میں بتایا گیا حکومتی اعلان کے ایک گھنٹے بعد ہی ساری ٹکٹیں فروخت ہوگئیں۔مقامی فٹ بال جرنلسٹ روحا پوربخش نے بتایا کہ اب تک 3 ہزار 500 خواتین نے ٹکٹ خرید چکی ہیں۔انہوں نے اپنے تاثر کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مجھے یقین نہیں آتا یہ حقیقت میں بدل رہا ہے، ٹیلی ویڑن کو فٹ میچ دیکھ کر رپورٹنگ کی لیکن اب بذات خود اسٹیڈیم میں میچ دیکھوں گی۔میڈیا رپورٹ کے مطابق اسٹیڈیم میں خواتین کی علیحدہ نشستیں ہوں گی اور 150 خاتون پولیس اہلکار تعینات ہوں گی۔علاوہ ازیں 3 مارچ 2018 کو فٹ بال کی عالمی تنظیم فیفا کے سربراہ گیانی انفنٹینو نے کہا تھا کہ ایران نے انھیں یقین دلایا ہے کہ خواتین کو بہت جلد ملک میں ہونے والے مردوں کے فٹبال میچ اسٹیڈیم جا کر دیکھنے کی اجازت دی جائے گی۔ایران میں سخت اسلامی قوانین کی پاداش میں متعدد سماجی کارکنوں سمیت خواتین کھلاڑیوں کو سزائیں مل چکی ہیں۔یکم اپریل 2017 میں ایران نے چین میں
منعقدہ ایک ٹورنامنٹ میں اسلامی قوانین کی خلاف ورزی پراپنے ملک کی بلیئرڈ ٹیم کی چند خاتون کھلاڑیوں پر ایک سال کی پابندی عائد کردی تھی۔ایران کی باؤلنگ، بلیئرڈ اور باکسنگ فیڈریشن نے خلاف ورزی کی نوعیت کو واضح نہیں کیا تھا تاہم ایک سالہ پابندی کا اعلان کردیا ہے۔ایرانی حکام کے مطابق چائنا اوپن بلئیئرڈ ٹورنامنٹ کے لیے بھیجی گئی خواتین پراسلامی قواعد کی خلاف ورزی کی پاداش میں ڈومیسٹک اور تمام بیرونی مقابلوں میں
شرکت کے لیے ایک سال کی پابندی ہوگی۔ایرانی خواتین اور لڑکیوں پر 1981 میں مردوں کے کھیلوں میں شرکت پر پابندی عائد کی گئی تھی تاہم دیگر ممالک کی خواتین کو اس طرح کے میچوں میں شرکت کی اجازت دی جاتی رہی ہے۔غیرملکی میڈیاکے مطابق ایران میں کھیلوں کے میدانوں تک خواتین کی رسائی کے لیے مہم چلانے والے ایک گروپ کی جانب سے 2 لاکھ سے زائد افراد کی دستخط شدہ پٹیشن فیفا کو جمع کرادی گئی تھی۔



[ad_2]

مصباح الحق کو تمام فارمیٹس میں کوچنگ کی ذمہ داری دے کر بوجھ لاد دیا گیا، رمیز راجہ

کراچی(این این آئی) سابق پاکستانی کپتان رمیز راجہ نے کہا ہے کہ مصباح الحق کو تمام فارمیٹس میں کوچنگ کی ذمہ داری دے کر بوجھ لاد دیا گیا ہے۔ ایک انٹرویو میں رمیز راجہ نے کہاکہ مصباح الحق کو تمام فارمیٹس میں کوچنگ کی ذمہ داری دے کر بوجھ لاد دیا گیا ہے، میں سمجھتا ہوں کہ ٹوئنٹی 20 کھلاڑیوں کی سمت درست کرنے کیلگے ہارڈ ہٹر کوچ کی ضرورت ہے، انھوں نے کہا کہ پرانے
کھلاڑیوں کو واپس لایا گیا جو دباؤ میں پرفارم نہیں کرپائے، بابر اعظم سے اوپننگ کرانا درست نہیں تھا۔سرفراز احمد اچھی فارم میں نہیں، ان

کی جگہ حارث سہیل کو چوتھے نمبر پر بھیجنا چاہیے تھا، رمیز نے کہا کہ مختصر ترین فارمیٹ میں نوجوان کھلاڑیوں کو سامنے لانے کی ضرورت ہے، ہم نے دوسرے ٹی 20 میں صرف 2 چھکے جڑے جبکہ حریف سائیڈ کی اننگز میں 8 سکسرز شامل تھے۔



[ad_2]

بھارتی اور اسرائیلی پائلٹس کو اس بات کا علم ہی نہیں کہ ۔۔۔!!! پاک فضائیہ کے سابق چیف سہیل امان نے 27 فروری کو پیش آنیوالے واقعہ سے متعلق بڑاانکشاف کر دیا ، پوری دنیا پاکستانی پائلٹوں کی مہارت پر دنگ رہ گئی

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان ائیرفورس کے سابق چیف سہیل امان نےبھارتی فضائیہ کی پیشہ ورانہ منصوبہ بندی اور پائلٹس کو ملنی والی تربیت پر بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی جنگی ہوا بازوں کی پیشہ وارانہ صلاحیتوں کا اندازہ ا س بات سے بخوبی لگایا جا سکتا ہے کہ ان کے ایک
روسی ایس یو 30 جنگی طیارے کو ان کے اپنے زیر کنٹرول علاقے میں 25 میل اندر پاکستانی پائلٹ نے لائن آف کنٹرول عبور کیے بغیر مار گرایا۔ ان کا کہنا تھا کہ جنگ کسی بھی مسئلے کا حل نہیں لیکن ہم ہمہ وقت دشمن کی کسی بھی جارحیت

کا منہ توڑ جواب دینے کیلئے تیار ہیں۔سابق یئر چیف سہیل امان نے مزید کہا کہ بھارتی افواج کی آپس کی کوآرڈی نیشن حال یہ ہے کہ 27 فروری کو پاکستان کی طرف سے جوابی وار نے انہیں بوکھلاہٹ کا شکار کر دیا تھا کہ اس دوران بھارت نے اپنا ہی ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر مار گرایاتھا۔ ایک سوال دہرایا جاتا ہے کہ اسرائیلی پائلٹ بھی اس آپریشن میں شامل تھا کیا کوئی اسرائیلی پائلٹ گرفتار ہوا یا نہیں ؟ سابق ائیر چیف نے اس بات پر براہ راست جواب دینے سے گریز کرتے ہوئے کہا کہ اگر اسرائیلی پائلٹ بھارت کیساتھ شامل تھے تو اس کا مطلب یہ ہوا کہ ان کی تیاری اور آپریشن کی پلاننگ کا کوئی حال نہیں ۔



[ad_2]

صرف (ن) لیگ ہی نہیں بلکہ 22 کروڑ عوام دھرنے میں شرکت کرینگے‘ پی ٹی آئی حکومت کیلئے خطرے کی گھنٹی بج گئی

لاہور( این این آئی،آن لائن )مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما کیپٹن (ر) محمد صفدر نے کہا ہے کہ محبان وطن عدالتوں میں پیش ہو رہے ہیں اوران کا گناہ صرف اتنا ہے کہ وہ آئین پاکستان اور جمہوریت سے پیار کرتے ہیں۔
احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کا خط میاں نواز شریف کو پہنچا تھا اور نواز شریف کا پیغام مولانا فضل الرحمان کو پہنچ گیا تھا۔اب کی بار پورا پاکستان اس دھرنے میں آئے گا،صرف مسلم لیگ (ن) ہی نہیں بلکہ 22 کروڑ عوام اس دھرنے میں شرکت

کرے گی۔دوسری جانب مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نوازموبائل برآمدگی کے الزام کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہہ جنہوں نے الزام لگایا، تردید بھی انہیں کی طرف سے آئی۔ جس غلط طریقے سے یہ حکومت آئی اسی طرح سے چلی جائے گی۔لاہور میں احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے موبائل برآمدگی کے الزام کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ جنہوں نے الزام لگایا، تردید بھی انہیں کی طرف سے آئی۔مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ سے متعلق پوچھے گئے سوال پر مریم نواز کا کہنا تھا کہ جس طرح جھوٹ کے پاوں نہیں ہوتے اسی طرح دھاندلی زدہ حکومت کے پائوں نہیں اور جس غلط طریقے سے یہ حکومت آئی اسی طرح سے چلی جائے گی۔بعد ازاں مریم نواز اور یوسف عباس کو احتساب عدالت سے واپس جیل روانہ کر دیا گیا۔



[ad_2]

بیورو کریسی کی رکاوٹیں پاکستان 21.6 ڈالر کے غیر ملکی قرضوں و گرانٹ سے محروم حکومت مہنگے قرضے لینے پرتمام توانیاں صرف کرنے لگی

کراچی(این این آئی) منصوبوں کی تکمیل میں طویل تاخیر اور نظام کی خامیاں اور کمزوریاں 21.6 ارب ڈالر کے غیرملکی قرضوں اور گرانٹ کے حصول کی راہ میں رکاوٹ بن گئیں۔وزارت اقتصادی امور کے اعدادوشمار کے مطابق21.6 ارب ڈالر
کی خطیر رقم میں 17.7 ارب ڈالر کے (1.25 فیصد تا 3 فیصد شرح سود پر)نسبتاً سستے قرضے اور 3.9 ارب ڈالر کی غیرملکی گرانٹ شامل تھی جس کی فراہمی کا وعدہ انٹرنیشنل ڈونرز نے کیا تھا مگر مختلف وجوہ کی بنا پر یہ گرانٹ نہ مل سکی۔وزارت اقتصادی امور اور قرض دینے والے اداروں میں موجود ذرائع کے مطابق پاکستان بیوروکریسی

کی رکاوٹوں،کنٹریکٹ دینے کے تیزرفتار طریقہ کار اور 21.6 ارب ڈالر کے اپروول پروسیس کو سادہ بنا کر اس رقم کا کم از کم ایک چوتھائی حاصل کرنے کے لیے متحرک ہوسکتا ہے۔ وزارت اقتصادی امور کے ڈیٹا کے مطابق جون 2019 تک غیر ممالک سے نہ ملنے والے قرضوں اور گرانٹس کا حجم 21.6 ارب ڈالر تھا۔گزشتہ سال یہ حجم 23.6 ارب ڈالر تھا۔ یوں رواں سال اس رقم میں 2 ارب ڈالر (8.6 فیصد)کی کمی آئی۔ پاکستان سستے قرضے اور گرانٹس ایسے وقت میں حاصل کرنے سے محروم ہے جب حکومت اور اسٹیٹ بینک زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافے کے لیے مہنگے قرضے لینے کی راہ پر چل پڑے ہیں۔ واضح رہے کہ 21.6 ارب ڈالر کے قرض و گرانٹس کے لیے غیرملکی ڈونرز اور قرض دہندگان کے ساتھ معاہدوں پر دستخط پہلے ہی ہوچکے ہیں۔



[ad_2]

نیب متحرک،صبح سویرے کس بڑی سیاسی شخصیت کے گھر چھاپہ مارا، کونہ کونہ کھنگا لا 2گھنٹے بعد تلاش کے بعد ایسا کیا ملا جس سے اہلکاروں کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی احتساب بیورو کاوزیر اعلیٰ سندھ کے مشیر جیل خانہ جات اعجاز جاکھرانی کے گھر پر چھاپہ ،کونہ کونہ چھان مارا،نجی ٹی وی کے مطابق نیب ٹیم دو گھنٹے سے زائد اعجاز جاکھرانی کے گھر میں رہی ، ملازمین سے
پوچھ گچھ کی اور اہم دستاویزات قبضے میں لے لیں۔یا درہے کہ نیب کی ٹیم سندھ میں بہت متحرک ہے ، حال میں سابق اپوزیشن لیڈر اور پیپلز پارٹی کے اہم رہنما خورشید شاہ کو بھی گرفتار کیا تھا۔ اس کے علاوہ کئی دیگر پی پی رہنما بھی جیل میں ہیں



[ad_2]

حکومت نے جمعیت علما اسلام (ف)کے تمام مدارس کی فہرست مانگ لی،وزارت داخلہ کاصوبوں کو مراسلہ جاری،ہنگامی اقدامات،خفیہ ادارے متحرک

دریاخان(آن لائن)حکومت نے جمعیت علما اسلام (ف)کے تمام مدارس کی فہرست مانگ لی، مدارس میں معلمین اور طلبا کے کوائف بھی فراہم کیے جائیں، وفاقی وزارت داخلہ نے صوبوں کو مراسلہ جاری کردیا ہے ضلع بھکر سمیت تمام اضلاع میں ہنگامی طور پر کارکنان و مدارس کی فہرستیں مرتب کی جانے لگیمقامی سطح پر کارکنان کو نظر بند اور حراست میں رکھنے کا بھی عندیہ خفیہ ادارے متحرک ہوگئے
دریاخان سے بھی ڈیٹا اکٹھا کرنا شروع کردیا  گیا کے پی کے سے ملحقہ پنجاب کے تمام راستے کڑی نگرانی میں ہوں گے جن میں دریاخان ڈیرہ پل بھی شامل ہے جمعیت

علما اسلام ف کے27 اکتوبر کو احتجاجی مارچ کے اعلان کے بعد وفاقی وزارت داخلہ اور سکیورٹی ادارے بھی متحرک ہوگئے ہیں ایک طرف جمعیت علما اسلام ف کے آزادی مارچ کی تیاریاں عروج پر ہیں، دوسری جانب حکومت نے احتجاجی یا آزادی مارچ اور دھرنے کے خلاف اپنی حکمت عملی بھی بنانا شروع کردی ہے۔ سربراہ جے یوآئی ف مولانا فضل الرحمان نے اعلان کررکھا ہے کہ 27 اکتوبر کو 15لاکھ لوگ مارچ میں شریک ہوں گے اس کے پیش نظر وفاقی حکومت نے سکیورٹی انتظامات کو حتمی شکل دینے اور آزادی مارچ کا اثر زائل کرنے کیلئے اپنی حکمت عملی ترتیب دینا شروع کردی ہے۔ وزارت داخلہ نے جمعیت علما اسلام (ف) کے تمام مدارس کی فہرست مانگ لی، مدارس میں معلمین اور طلبا کے کوائف بھی فراہم کیے جائیں، وفاقی وزارت داخلہ نے صوبوں کو مراسلہ جاری کردیا ہے۔ مراسلے میں صوبوں سے جے یوآئی ف کے ملک بھر میں موجود تمام مدارس کی تعداد اور مدارس میں معلمین اور طلبا کا ڈیٹا اکٹھا کرکے فہرست مرتب کرنے کی ہدایت کردی ہے۔



[ad_2]

اسلام آباد ہائیکورٹ، مولانا فضل الرحمن کے حکومت مخالف آزادی مارچ،دھرناروکنے کیلئے درخواست کی سماعت،فیصلے کی گھڑی آگئی

اسلام آباد (این این آئی) اسلام آباد ہائیکورٹ میں جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے حکومت مخالف آزادی مارچ اور دھرنے کیخلاف درخواست سماعت کیلئے مقرر کردی۔چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ (آج) درخواست پر سماعت کرینگے۔شہری حافظ احتشام کی جانب سے دائر کی گئی درخواست میں
موقف اختیار کیا گیا ہے کہ مولانا فضل الرحمن کو آزادی مارچ اور دھرنا دینے سے روکا جائے۔درخواست میں کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ اور اسلام آباد ہائی کورٹ نے دھرنے مختص جگہ کرنے کا حکم دے رکھا ہے۔درخواست میں سیکرٹری داخلہ،سیکرٹری تعلیم،سربراہ جے یو آئی

ایف مولانا فضل الرحمن،ڈپٹی کمشنر اسلام آباد اور چیئرمین پیمرا کو فریق بنایا گیا ہے۔



[ad_2]

وزیراعظم عمران خان کاچین میں شاندار استقبال، 19 توپوں کی سلامی،اہم معاہدوں پر دستخط ہوگئے

بیجنگ(این این آئی) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان اور علاقائی ترقی کیلئے سی پیک منصوبوں کا کردار اہم ہے،سی پیک منصوبوں کی بروقت تکمیل حکومت کی اولین ترجیح ہے،چینی صنعت کاروں کو پاکستان میں مراعات دی جائیگی، بیرونی صنعتوں کی پاکستان منتقلی سے حاصل ہونیوالے ٹیکس سے ملکی معیشت میں بہتری آئیگی۔منگل کو وزیراعظم عمران خان کا چینی ہم منصب لی کی چیانگ سے ملاقات کیلئے بیجنگ گریٹ ہال آف پیپل پہنچنے پر شاندار استقبال کیا گیا اور
گارڈ آف آنردیا گیا،وزیراعظم نے چینی ہم منصب کے ہمراہ پریڈ کا معائنہ کیا،وزیراعظم کو 19 توپوں کی سلامی

بھی دی گئی۔ وزیراعظم عمران خان اور چینی ہم منصب کے درمیان ملاقات میں خطے کی سلامتی کی صورتحال سمیت اہم امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔دونوں رہنماؤں کی ملاقات کے حوالے سے جاری کئے گئے اعلامئے کے مطابق دونوں وزرائے اعظم نے باہم اقتصادی شراکت داری کی مضبوطی پر تبادلہ خیال کیا جبکہ دونوں ممالک کے وفود کی ملاقات کے بعد عشایئے کا بھی اہتمام کیا گیا۔ مذاکرات میں دو طرفہ تعاون کو فروغ دینے سے متعلق امور پر گفتگو کی گئی۔اعلامئے کے مطابق ملاقات میں پاکستان اور چین کے درمیان سماجی اقتصادی تعاون کو فروغ دینے کے مختلف معاہدوں اور ایم او یوز پر دستخط کئے گئے، وزیر اعظم عمران خان اور چینی ہم منصب بھی معاہدوں پر دستخط کے موقع پر موجود تھے۔وزیر اعظم عمران خان نے چینی ہم منصب سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سی پیک منصوبوں کی بروقت تکمیل حکومت کی اولین ترجیح ہے، پاکستان اور علاقائی ترقی کیلئے سی پیک منصوبوں کا اہم کردار ہے۔وزیر اعظم نے چینی صنعت کو پاکستان میں منتقل کرنے کیلئے مراعات کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ ایسے اقدامات سے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ بیرونی صنعتوں کی پاکستان منتقلی سے حاصل ہونے والے ٹیکس سے
ملکی معیشت میں بہتری آئے گی۔اعلامیہ کے مطابق چینی وزیر اعظم نے گوادر میں سی پیک منصوبوں کیلئے فاسٹ ٹریک اقدامات کو سراہا اور پاکستان کے قومی مفاد کے ایشوز کی حمایت کی یقین دہانی کرائی۔چینی وزیر اعظم نے کہا کہ سی پیک کے دوسرے فیز کے منصوبوں سے پاکستان میں اقتصادی ترقی اور سرمایہ کاری کے مزید مواقع پیدا ہوں گے۔وزیر اعظم کے چینی سرمایہ کاروں اور کارپوریٹ سیکٹر کے نمائندگان سے ملاقات کے جاری اعلامئے کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی
چینی سرمایہ کاروں اور کارپوریٹ سیکٹر سے وسیع البنیاد بات چیت ہوئی ہے۔وزیر اعظم عمران خان سے چین کی تیل، گیس، کان کنی، ٹیکسٹائل اور توانائی کے شعبوں میں کام کرنیوالی کمپنیوں کے سربراہان ملے۔ وزیر اعظم سے ملاقات کرنے والوں نے پاکستان میں جاری اپنے منصوبوں سے آگاہ کیا۔اعلامیہ کے مطابق چینی کمپنی کے سربراہوں نے نئے منصوبے شروع کرنے کی تجاویز سے بھی وزیراعظم پاکستان کو آگاہ کیا جو تیل، گیس، توانائی، تعمیرات، ٹائروں کی تیاری اور قیمتی دھاتوں سے متعلق ہیں۔ چینی کمپنیوں نے ٹیکسٹائل و انڈسٹریل پارک اور ماحول دوست توانائی کے منصوبوں سے بھی عمران خان کو آگاہ کیا۔



[ad_2]

آزادی مارچ کی تمام تیاریاں مکمل، کوئی مائی کالال ہمیں روک نہیں سکتا،روکنے کی کوشش کی تو پھر کیا کرینگے؟جمعیت علماء اسلام نے دھمکی دیدی

کوئٹہ(آن لائن)جمعیت علماء اسلام کے مرکزی سیکرٹری جنرل وسینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا ہے کہ آزادی مارچ کی تمام تیاریاں مکمل ہوچکی ہیں آزادی مارچ سے کوئی مائی کالال ہمیں روک نہیں سکتا اسلام آبادمیں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی اور سلیکٹڈ وزیراعظم کے خلاف27اکتوبرکو آزادی مارچ ہمارا جمہوری حق ہے اورہم یہ حق استعمال کر کے رہیں گے اگر ہمارے راستے بندکرنے کی کوشش کی گئی تو اس سے پورا ملک جام ہوگا ہمارا حکومت سے اختلاف ہے
ریاستی اداروں سے نہیں اورنہ کوئی جھگڑا ہے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے کیا

مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ 27اکتوبر کو اسلام آباد میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے ساتھ ساتھ ملک میں دھاندلی زدہ انتخابات کے نتیجے میں آنے والی حکومت سے خاتمے کیلئے آزادی مارچ کاانعقاد کیا جارہا ہے اس سلسلے میں آزادی ملین مارچ کے تمام تر تیاریاں اور انتظامات مکمل ہوچکے ہیں ہمیں امیدہے کہ صوبائی حکومتیں ملین مارچ میں شرکت کیلئے آنے والے کارکنوں کی راہ میں رکاوٹیں پیدا نہیں کرینگے اگر ایسا کیا گیا تو اس سے پورا ملک جام ہوگا جو ہم نہیں چاہتے انہوں نے کہا کہ جمعیت علماء اسلام کے کارکن اور آزادی ملین مارچ کے شرکاء ہر حال میں اسلام آباد پہنچیں گے ہم نے اس سے قبل ملک بھر میں کامیاب اور پر امن 14ملین مارچ کئے ہیں پتہ نہیں اس بار کیوں حکومت بوکھلاہٹ کاشکار ہوچکی ہے اور ملین مارچ میں رکاوٹیں پیدا کرنے کی ناکام کوششیں کررہی ہیں انہوں نے کہا کہ ہمارا ریاستی اداروں سے کوئی اختلاف یاجھگڑا نہیں ہے ریاستی اداروں کے اہلکار ہمارے کارکنوں کوملین مارچ میں شرکت کرنے پر دھمکارہے ہیں ہمارا حکومت سے اختلاف ہے اداروں سے نہیں اور نہ ہی کوئی جھگڑا ہے ملین مارچ میں دیگر سیاسی جماعتوں کے کارکن اور رہنماء بھی ہمارے ساتھ اسٹیج پر شرکت کرینگے انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کے وزیر بے تدبیر ایسے ایسے بیانات دے رہے ہیں جو انتہائی اخلاقیات اور پارلیمانی زبان کے منافی ہیں مگر ہمیں ان کے اس طرح کے بیانات سے کوئی غرض نہیں کیونکہ جولوگ جیسے ہوتے ہیں
اسی مزاج کی گفتگو کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ اسلام آباد میں ملین مارچ کرنا ہمارا جمہوری حق ہے اور ہم اسے استعمال کرکے رہیں گے اور یہ حق استعمال کرنے سے ہمیں کوئی مائی کا لال روک نہیں سکتا انہوں نے کہا کہ ہمارا اسلام آباد کا آزادی مارچ بھی پرامن ہوگاخیبر پختونخوا کے سلیکٹڈ وزیراعلیٰ نے قافلے کے روکنے کی جوبات کی اس پر میں یہ کہتا ہوں کہ چھوٹا منہ اور بڑی بات وہ ہمارے کارکنوں کو روک نہیں سکتے اگر ایسا کیا گیاتو ان کی اپنی حکومت جام ہوکررہے گی انہوں نے کہا کہ ایک طرف تو حکومت کہتی ہے کہ ملک میں جمہوریت ہے جب جمہوریت ہے تو پھر کس بات کا خوف ہے ہمیں ہمارے آئینی حق سے کوئی نہیں روک سکتا۔



[ad_2]