Tag Archives: ساتھ

پارلیمنٹ کو توڑنے میں ہم کسی کے ساتھ نہیں،پیپلزپارٹی نے  حکومت ہٹانے کا اعلان کردیا

اسلام آباد (این این آئی) پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ کو توڑنے میں ہم کسی کے ساتھ نہیں، حکومت ہٹانے میں سب کے ساتھ ہیں،پاکستان ایک گلدستہ ہے، اس کو منتشر کون کررہا ہے؟ کراچی میں آپ کو سب قومیتیں ملیں گی، آج 149 کا تذکرہ کیا جارہا ہے،بھیڑے کی طرح حکومت بہانے مت بنائے، فیڈریشن کی بات کرے،جیوے میرا پنجاب، بلوچستان، خیبرپختونخواہ اور سندھ، تبھی بنے گا پاکستان، اور پارلیمان چلے گا۔
جمعہ کو اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہاکہ پاکستان ہمارے لیے بہت بڑی نعمت، چھاؤں اور پہچان

ہے۔انہوں نے کہاکہ وفاق ایک گلدستہ ہے اس کو کون تباہ کر رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ کراچی میں ایک نئی بحث چھیڑ دی گئی ہے،کچرے پر سیاست نہیں ہوتی،کچرا تو لاہور میں بھی بہت ہے۔انہوں نے کہاکہ حکومت کو ہٹانے میں ہم سب کے ساتھ ہیں۔انہوں نے کہاکہ پارلیمنٹ کو توڑنے میں ہم کسی کے ساتھ نہیں اور اس حوالے سے  قیادت نے واضح کہہ دیا ہے۔انہوں نے کہاکہ جیوے پنجاب، جیوے سندھ، جیوے کے پی اور جیوے بلوچستان سے ہی وفاق بنتا ہے۔انہوں نے کہاکہ اچھے جذبے کا اظہار اسد عمر نے کیا، ان کا فوکس مسلم ریاست تھا جس کو ہم آج بھی مانتے ہیں اور آنیوالی نسلیں بھی مانیں گی۔ انہوں نے کہاکہ اگر تاریخ کا حوالہ آپ دیتے ہیں تو پھر اس کا کریڈٹ بنگال اور سندھ کو جاتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ کوئی اپنی تاریخ بنالے تو پھر کیا کہیں،جب سندھ میں الیکشن ہوئے تو آدھی نشستیں کانگریس اور آدھی مسلم لیگ نے جیتیں۔ انہوں نے کہاکہ جی ایم سید پکے مسلم لیگی تھے اور قائد کے آگے جھنڈا لے کر چلتے تھے۔ انہوں نے کہاکہ تین نشستیں مسیحی افراد کی تھیں، جو غیر جانبدار ہوگئے، تین دن گھنٹی بجتی رہی۔ انہوں نے کہاکہ نوید قمر کے نانا میرا محمد شاہ سپیکر تھے، سندھ اسمبلی نے قراردار منظور کی اور لیاقت علی خان نے جھنڈا لہرایا۔ انہوں نے کہاکہ سندھی اسی وجہ سے تھوڑے سے مغرور ہیں، پاکستان سب نے ملکر بنایا لیکن قرارداد صرف بنگال اور دوسرا سندھ میں منظور ہوئی۔
انہوں نے کہاکہ پاکستان ایک گلدستہ ہے لیکن اس کو منتشر کون کررہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم گریز کررہے ہیں مگر حکومت نے پھر ایک نئی بحث چھیڑ دی ہے۔ انہوں نے کہاکہ کراچی میں آپ کو سب قومیتیں ملیں گیں، لیکن 149 کا تذکرہ کیا جارہا ہے۔انہوں نے کہاکہ بھیڑے کی طرح حکومت بہانے مت بنائے، فیڈریشن کی بات کرے۔ انہوں نے کہاکہ اس وقت ایک لچر شخص ہندوستان کا حکمران ہے، کشمیر کی صورتحال سامنے ہے،اس وقت ایران کی صورتحال، افغان مذاکرات صورتحال سامنے ہے۔ انہوں نے کہاکہ جب ذمہ دار لوگ ایسے خطرات میں ایسی بات کرینگے تو صورتحال تشویشناک ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ جیوے میرا پنجاب، بلوچستان، خیبرپختونخواہ اور سندھ، تبھی بنے گا پاکستان، اور پارلیمان چلے گا۔



بیلجیئم کا پاکستان کے ساتھ کھیلنے سے انکار

ٹوکیو (این این آئی)جاپان کے شہر ٹوکیو میں آئندہ سال منعقد ہونے والے اولمپکس کے لیے قومی ہاکی ٹیم کوالی فائر مقابلے میں 26 اور 27 اکتوبر کو ایمسٹر ڈیم میں میزبان ہالینڈ سے مقابلہ کریگی۔پاکستان ہاکی فیڈریشن کے سیکریٹری اولمپئین آصف باجوہ کے مطابق فیڈریشن نے ورلڈ چمپئن بیلجیئم سے اولمپک کوالی فائر سے قبل
پریکٹس میچ کھیلنے کیلئے رابطہ کیا تھا جس کا مثبت جواب نہیں ملا۔سیکرٹری ہاکی فیڈریشن آصف باجوہ کا کہنا ہے کہ شیڈول کے مطابق قومی ہاکی ٹیم 20اکتوبر کو ہالینڈ روانہ ہوگی۔آصف باجوہ کے مطابق ہمیں یورپ میں پریکٹس میچ کھیلنے کیلئے کچھ مثبت جواب

ملا، جس کے لیے ہم دیگر ٹیموں سے رابطے میں ہیں ،تو ممکن ہے کہ ٹیم 20 اکتوبر سے قبل بھی روانہ ہو سکتی ہے۔



پرفارمنس کے ساتھ فٹنس اور ڈسپلن ٹیم میں آنے کی واحد کنجی ہے : مصباح الحق

لاہور (این این آئی) قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق نے کہا ہے کہ کھلاڑیوں کے لئے پرفارمنس کے ساتھ فٹنس اور ڈسپلن قومی ٹیم میں آنے کی واحد کنجی ہے۔قائد اعظم ٹرافی کے لیے ٹیموں کا کیمپس کا آغاز ہوگیا ہے جس کے پہلے مرحلے میں تمام کرکٹرز کے قذافی اسٹیڈیم میں فٹنس ٹیسٹ لیے گئے۔اس کے بعد نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں سینٹرل پنجاب کے کیمپ میں قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق نے لیکچر دیا۔مصباح الحق کا کہنا تھا کہ پرفارمنس کے ساتھ فٹنس اور ڈسپلن قومی ٹیم میں آنے کی واحد کنجی ہے، نئے

سسٹم اور نئے طریقہ کار کے
مطابق خود کو ڈھالیں۔ جس چیز کی بھی پریکٹس کریں اس کو پریکٹس برائے پریکٹس سمجھ کر نہ کریں بلکہ مکمل جان ماریں اور یہ ذہن میں رکھیں کہ میں نے اس خامی کو بہتر کرنا یے۔ یہ سوچ ہو گی تو پرفارمنس بھی بہتر ہوگی اور سب خوش بھی ہوں گے۔ہیڈ کوچ نے واضح کیا کہ ٹیم کے دروازے سب کے لیے کھلے ہیں۔ جو فٹنس، ڈسپلن کے ساتھ کارکردگی میں سب سے آگے ہوگا وہ ہماری ترجیحات میں شامل ہوگا۔ مصباح نے کرکٹرز کو تلقین کی کہ محنت کو اپنی عادت بنالیں۔ کوئی مسئلہ ہوتو کوچز سے بات کریں اور مجھ سے رابطہ کریں۔



ظالم نے اسے پانی بھی نہیں پلایا مارتا ہی رہا، جس ہسپتال میں لے کر گئے وہاں ایمرجنسی ہی نہیں تھی، لاہور میں سکول ٹیچر کے تشدد سے وفات پانے والے حافظ حسنین کے ساتھ کیا ہوا؟ والدہ کے لرزہ خیز انکشافات

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) سکول ٹیچر کے ہاتھوں جان کی بازی ہارنے والے حنین کی والدہ نے اپنے ایک بیان میں روتے ہوئے کہا کہ میں نے اپنے بچے کو صحیح سلامت اپنے ہاتھوں سے سکول بھیجا تھا، ظالم نے اسے اتنا زیادہ مارا، اسے پانی بھی نہیں پلایا وہ مارتا ہی رہا مارتا ہی رہا، کسی طالب علم نے بھی جا کر نہیں پکڑا، بس سبق ہی تو نہیں یاد تھا، یہ لوگ جس ہسپتال میں میرے بچے کو لے کر گئے وہاں ایمرجنسی ہی نہیں تھی،
بچہ ایمبولینس میں پڑا ہوا تھا، میں نے کہا کہ حنین اٹھ جاؤ تمہاری

ماما آئی ہے وہ ہلا ہی نہیں اس کے سانس ختم ہو چکے تھے، وہ مردہ حالت میں تھا، ظالم نے اتنا مارا کہ میرے بچے نے کہا کہ میرے دل کو کچھ ہو رہا ہے سر کہتے ہیں کہ ڈرامے کر رہا ہے، میرے بچے کی شرٹ ہی غائب کر دی، میرے بچے کا سر ہی دیوار پر دے مارا۔ میرا بچہ تو سر پر بالوں کو ہاتھ ہی نہیں لگانے دیتا تھا، وہ کہتا تھا کہ ماما میرے بالوں پر ہاتھ پیار سے کیوں پھیرتی رہتی ہیں، ظالم سر نے بالوں سے پکڑ کر ہی دے مارا میرے بچے کو، سارے دوست اس کے کھڑے تھے لیکن کسی نے ہمت نہیں کی کہ سر ہمیں بھی نہ مارنے لگ جائیں۔ میرے بیٹے کے ساتھ کسی نے دوستی نہ نبھائیں بے چارہ بیس منٹ تک تڑپتا ہی رہا اگر اسے فوراً ہسپتال پہنچا دیتے تو شاید بچ جاتا۔ ایک تھپڑ کافی تھا اتنا مارنے کی کیا ضرورت تھی، اسے مارنے کی اتنی کیا ضرورت تھی، حنین کو مارنے والے کو میرے سامنے لایا جائے میں اس کا گریبان پکڑ کر اس سے پوچھوں کہ میرے بچے نے تیرا کیا بگاڑا تھا۔  دوسری جانب سکول ٹیچر کے ہاتھوں جان کی بازی ہارنے والے حنین کے والد نے بیٹے کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں تشدد کے نشان تک غائب کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے وزیراعظم سمیت چیف آف آرمی سٹاف سے انصاف کا مطالبہ کیا ہے۔تفصیلات کے مطابق رات گئے سکول استاد کے مبینہ تشدد سے جاں بحق ہونے والے حنین بلال کے والد محمد بلال نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ میوہسپتال کے ڈاکٹروں نے اسکول انتظامیہ کی ملی بھگت سے ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں گڑ بڑ کی،
رپورٹ میں تشدد کے واضح نشان اور سر کی چوٹ تک ظاہر نہیں کی گئی۔مقتول طالب علم کے والد نے الزام عائد کیا کہ ڈاکٹرملزم کامران کوبے گناہ قرار دینے پر تلے ہوئے ہیں۔اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اگر حکام انہیں انصاف فراہم نہیں کرسکتے تو انہیں بھی بیٹے کیساتھ ہی دفنا دیں،اگر انہیں انصاف نہ ملا تو وہ دھرنا دیں گے،مقتول طالب علم کے والد کا کہنا تھا کہ وزیراعظم اور آرمی چیف واقعے کا نوٹس لیں۔واضح رہے کہ پانچ ستمبر کو لاہور کے علاقے گلشن راوی میں نجی اسکول میں ٹیچر کے تشدد سے طالب علم انتقال کر گیا، اہل خانہ کا کہنا تھا کہ 16 سال کا حنین ٹیچر کے تشدد سے بے ہو ش ہوا لیکن اسکول انتظامیہ نے اسے اسپتال نہیں بھیجا۔



لیڈی کانسٹیبل فائزہ نواز نے کوئی استعفیٰ نہیں دیا، ان کے ساتھ اب کیا ہوگا؟ڈی پی او شیخوپورہ صلاح الدین غازی  نے واضح کردیا

مریدکے(آئن لائن)ڈی پی او شیخوپورہ صلاح الدین غازی نے کہا ہے کہ لیڈی کانسٹیبل فائزہ نواز نے کوئی استعفیٰ نہیں دیا اس نے بس یہ خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اگر محکمہ اس کا ساتھ نہیں دے گا تو وہ اپنی ڈیوٹی سے مستعفی ہو جائیں گی۔لیکن پوری پنجاب پولیس فائزہ نواز کیساتھ کھڑی ہے ایک کانسٹیبل سے لے کر آئی جی پنجاب سب کے سب ہی فائزہ نواز کے ساتھ ہیں اور محکمہ پولیس کبھی بھی اسے تنہا نہیں چھوڑے گی۔
ان باتوں کا اظہا ر انہوں نے نویں محرم الحرام کے دن سکیورٹی چیکنگ والی خراسان بر لب نہر

داوکے پر کیا۔انہوں نے مزیدکہا کہ عوام، لیڈی و جینٹس کانسٹیبل یا کوئی آفیسر ہو ان کا تحفظ کرنا پنجاب پولیس کی ذمہ داری ہے۔داوکے میں ذوالجناح بر آمدگی پر کسی قسم کی کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ضلع بھر میں برآمد ہونے والے ماتمی جلوسوں اور مجالس کی سکیورٹی کے لیے متعدد سرکاری اداروں کے تعاون کے ساتھ ساتھ جدید نظام کا بھی سہارا لیا جا رہا ہے اور تمام جلوسوں کو ضلعی سطح پر قائم مرکزی کنٹرول روم میں مانیٹر کیا جا رہاہے۔ دفاتر میں کام کرنے والے عملہ کو بھی فیلڈ میں تعینات کر دیا گیا ہے جبکہ 10ویں محرم کے دوران پنجاب کانسٹیبلری سے اضافی نفری بھی فراہم کی جا رہی ہے جو امن عامہ کی صورتحال کو کنٹرول کرے گی۔اس موقع پر چیئر مین متحدہ پریس کلب سید قاسم علی شاہ،سرپرست اعلیٰ سید سجا دالحسن شیرازی،متولی مسجد و امام بارگاہ سید ساجد علی بخاری،سید طاہر محی الدین،چوہدری اعجاز احمد،سید محمد علی بخاری و دیگر موجود تھے۔ ڈی پی او شیخوپورہ صلاح الدین غازی نے کہا ہے کہ لیڈی کانسٹیبل فائزہ نواز نے کوئی استعفیٰ نہیں دیا اس نے بس یہ خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اگر محکمہ اس کا ساتھ نہیں دے گا تو وہ اپنی ڈیوٹی سے مستعفی ہو جائیں گی۔لیکن پوری پنجاب پولیس فائزہ نواز کیساتھ کھڑی ہے ایک کانسٹیبل سے لے کر آئی جی پنجاب سب کے سب ہی فائزہ نواز کے ساتھ ہیں اور محکمہ پولیس کبھی بھی اسے تنہا نہیں چھوڑے گی۔



میرے خلاف تمام کاررائیوں پر سرعام معافی مانگیں اور ساتھ ہی ۔۔۔!!! ڈیل کی پیشکش پرنوازشریف کھل کر سامنے آگئے ، اپنی شرائط بتا دیں

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف کا کہنا ہے کہ وہ کسی قسم کی ڈیل نہیں کریں گے اور قانونی جنگ لڑیں گے۔میڈیا رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ نواز شریف کو کی جانے والی پیشکش بحیثیت مجموعی ویسی ہی ہے جو انہیں تب دی گئی تھی جب وہ لندن میں تھے۔
یہی پیشکش نواز شریف کو 2018ء کے عام انتخابات سے قبل دی گئی تھی۔میڈیا رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ نواز شریف کا جواب اس وقت بھی وہی تھا اور اب بھی واضح الفاظ میں یہی ہے کہ آپ نے جو میرے ساتھ کیا ہے

اسے واپس لے لیں اور میرے خلاف کی گئی کارروائیوں پر سرعام معافی مانگیں۔۔اسی حوالہ سے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر پرویز رشید نے کہا ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے پاس سابق وزیر اعظم نوازشریف کو پیش کر نے کے علاوہ کچھ نہیں ،مریم نواز کو اپنے والد کی آنکھوں کے سامنے گرفتار کیا گیا ، والد ملاقات بھی نہیں کر سکتیں ،کیا آپ اس طرح کے کسی شخص سے ڈیل کی توقع رکھ سکتے ہیں۔ ایک انٹرویومیں مسلم لیگ (ن )کے سینئر رہنما سینیٹر پرویز رشید نے کہاکہ حکمرانوں کے پاس نواز شریف کو پیشکش کرنے کے علاوہ کچھ نہیں، جب بھی کسی مقدمے میں ان کے خلاف فیصلے کا اعلان ہونے والا ہوتا ہے، ڈیل کے حوالے سے گفتگو مختلف فریقین کو پیغام دینے کیلئے جان بوجھ کر پھیلا دی جاتی ہے۔ پرویز رشید نے کہا کہ نواز شریف نے اپنے اصولوں کیلئے بڑی قربانیاں دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ چار سالوں سے ان کی تذلیل کرنے اور بدنام کرنے کا ہر قدم اٹھایا گیا ہے، ان کی صاحبزادی کو ان کی آنکھوں کے سامنے گرفتار کیا گیا، وہ ان سے نہیں مل سکتیں، کیا آپ اس طرح کے کسی شخص سے ڈیل کی توقع کرسکتے ہیں جس نے اتنا کچھ برداشت کیا اور جمہوری مقصد کیلئے جامع تکلیف برداشت کر رہے ہیں۔



آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے متعدد شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان،نام جاری،محکمہ موسمیات نے بڑی پیش گوئی کردی

اسلام آباد (این این آئی) آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے متعدد شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان،محکمہ موسمیات نے بڑی پیش گوئی کردی،محکمہ موسمیات نے کہا ہے کہ آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے زیادہ تر علاقوں میں موسم گرم اور مرطوب رہے گا تاہم کچھ علاقوں میں بارش کا امکان ہے۔
محکمہ موسمیات کے مطابق اتوار کومیرپور خاص، حیدر آباد ڈویژن میں کہیں کہیں جبکہ مالاکنڈ، ہزارہ، کوہاٹ، بنوں، راولپنڈی، گوجرانوالہ، لاہور، سرگودھا، فیصل آباد، ڈی جی خان ڈویژن، اسلام آباد، کشمیر اور گلگت بلتستان میں چند مقامات پر تیز ہواؤں اور گرج چمک

کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔پیر کے روز ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم گرم اور مرطوب رہے گا تاہم گلگت بلتستان میں چند مقامات پر گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران راولپنڈی، گوجرانوالہ، سرگودھا، مالاکنڈ، ہزارہ، حیدر آباد ڈویژن، گلگت بلتستان، کشمیر اور اسلام آباد میں چند مقامات پر گرج چمک کے ساتھ بارش ہوئی۔سب سے زیادہ بارش بھکر 30، نگر پارکر 30، دیر 19، بدین 16، گجرات 12، بہاول پور 12، منڈی بہاؤالدین 10، مرین 07، سیالکوٹ 06، جہلم 06، منگلہ 05، لاہور 04، لیہ 04، کوٹلی 04، مظفر آباد 03، گوپس 03، اسلام آباد 01، راولا کوٹ 01 جبکہ بالا کوٹ میں ایک ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔گزشتہ روز سب سے زیادہ درجہ حرارت تربت میں 47، دادو اور سکھر میں 45 جبکہ سبی میں 44 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔



ملک کے بیشتر علاقوں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان،محکمہ موسمیات نے شہروں کے نام جاری کردیئے

اسلام آباد (این این آئی)محکمہ موسمیات نے کہا ہے کہ آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے بیشتر علاقوں میں بارش کا امکان ہے جبکہ بعض مقامات پر موسم گرم اور مرطوب رہے گا۔محکمہ موسمیات کے مطابق ہفتے کے روز راولپنڈی، گوجرانوالہ، لاہور، سرگودھا، فیصل آباد، مالاکنڈ، ہزارہ، مردان، پشاور، کوہاٹ، بنوں ڈویژن،
اسلام آباد اور کشمیر میں کہیں کہیں جبکہ میرپورخاص ڈویژن اور گلگت بلتستان میں چند مقامات پر تیز ہواؤں اور گرج چمک کیساتھ بارش کا امکان ہے۔گزشتہ روز ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم گرم اور مرطوب رہا تاہم راولپنڈی، گوجرانوالہ، میرپورخاص، حیدرآباد ڈویژن اوراسلام آباد میں چند

مقامات پر گرج چمک کے ساتھ  بارش ہوئی۔سب سے زیادہ بارش منڈی بہاؤالدین 76، جہلم 39،راولپنڈی (چکلالہ 38، شمس آباد 13)، حافظ آباد 29، مری 16، اسلام آباد (سیدپور 11، ائیر پورٹ 09، زیروپوائنٹ 06، بوکرہ 03، گولڑہ 02)، چکوال 10،منگلہ 02، سیالکوٹ(ائیر پورٹ02، سٹی01)، سندھ: ڈپلو 17،چھاچرو 08، مٹھی 07، نگرپارکر 05 اور اسلام کوٹ میں 01 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔کل ریکارڈ کیے گئے گرم ترین مقامات کیدرجہ حرارت میں تربت 46، سبی 44، دادو، سکھر اور دالبندین میں 43 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔ محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے بیشتر علاقوں میں بارش کا امکان ہے جبکہ بعض مقامات پر موسم گرم اور مرطوب رہے گا۔محکمہ موسمیات کے مطابق ہفتے کے روز راولپنڈی، گوجرانوالہ، لاہور، سرگودھا، فیصل آباد، مالاکنڈ، ہزارہ، مردان، پشاور، کوہاٹ، بنوں ڈویژن، اسلام آباد اور کشمیر میں کہیں کہیں جبکہ میرپورخاص ڈویژن اور گلگت بلتستان میں چند مقامات پر تیز ہواؤں اور گرج چمک کیساتھ بارش کا امکان ہے۔



حیران ہوں کہ مصباح کو ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر کے ساتھ چیئرمین پی سی بی نہیں بنایا گیا ،شعیب اختر کا تقرری پر دلچسپ تبصرہ

اسلام آباد (این این آئی) قومی ٹیم کے سابق کپتان مصباح الحق کو پاکستان کا ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر کا عہدہ دیئے جانے پر سابق اسپیڈ اسٹار شعیب اختر نے انتہائی دلچسپ تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ حیران ہوں کہ مصباح کو ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر کے ساتھ چیئرمین پی سی بی نہیں بنایا گیا۔تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ نے گزشتہ روز مصباح الحق کو تین سال کیلئے قومی ٹیم کا ہیڈ کوچ
اور چیف سلیکٹر مقرر کیا۔فاسٹ بولر شعیب اختر نے ٹوئٹر پیغام میں مصباح الحق کو ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر کے دوہرے کردار پر

مبارکباد دی۔شعیب اختر نے اپنے پیغام میں لکھا کہ حیران ہوں کہ مصباح کو ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر کے ساتھ چیئرمین پی سی بی نہیں بنایا گیا۔آخر میں شعیب اختر نے لکھا کہ میں مذاق کر رہا ہوں، مجھے پوری امید ہے کہ مصباح پہلے کی طرح انہیں کر سکتے ہیں۔



اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کئے جا رہے ہیں، وزیراعظم عمران خان نے بھی خاموشی توڑ دی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان کی اسرائیل سے تعلقات قائم کرنے کی خبریں زیر گردش ہیں اس حوالے سے جب معروف صحافی ارشاد احمد بھٹی نے وزیراعظم عمران خان سے سوال کیا کہ ”کیا اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کئے جا رہے ہیں؟“ اس سوال پر وزیراعظم عمران خان غصے میں آ گئے، اپنے ٹوئٹر پیغام میں معروف صحافی نے مزید بتایا کہ وزیراعظم نے کہا کہ وہ اسرائیل کے ساتھ تعلقات کا پروپیگنڈا کرنے والوں کی تلاش میں ہیں۔ دوسری جانب پاک فوج کے ترجمان
میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ ہماری پالیسی ڈیٹرنس (دفاع) کی ہے، اس کے

لیے جو بھی اس کا استعمال ہے ریاستی پالیسی کے مطابق ہوگا،موجودہ حالات میں قوم کو ایک ہونے کی ضرورت ہے اور ایک ہے،ایٹمی ہتھیاروں کے استعمال کا معاملہ سنجیدہ نوعیت کا ہے جس پر عام مقامات یا پریس کانفرنس پر بات نہیں کی جاسکتی،پاکستان ہائبرڈ جنگ سے نبرد آزما ہے، اسرائیل کو تسلیم کر نے سے متعلق بات پروپیگنڈا ہے، آرمی چیف مدت ملازمت میں توسیع نہیں چاہتے تھے،عوام چھ دسمبر کو شہیدوں کے گھر جائے،شہداء کے لواحقین کو محسوس ہوناچاہیے قوم ان کے ساتھ کھڑی ہے،قوم انسداد پولیو کو ملکر کامیاب بنائے۔ بدھ کو پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) میجر جنرل آصف غفور نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ میں بہادر کشمیریوں کو یہ پیغام دینا چاہتا ہوں کہ آزادی کی اس جدوجہد میں ہم آپ کے ساتھ کھڑے ہیں، ہماری سانسیں آپ کے ساتھ چلتی ہیں، 72 سال آپ نے بھارتی دہشت گردی کا مقابلہ کیا ہے، آپ کی جدوجہد آزادی کو دہشت گردی جیسے ناپسندیدہ عمل سے تابیر کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔پاک فوج کے ترجمان نے کہا کہ آپ کی ثابت قدمی کو سلام ہے، ہمیں آپ کی موجودہ مشکلات کا بھرپور احساس ہے، ہم آپ کے ساتھ کھڑے تھے، کھڑے ہیں اور انشااللہ کھڑے رہیں گے۔میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ ہمیں رب سے امید ہے کہ آپ اپنا جائز حق خود ارادیت حاصل کرکے رہیں گے۔