Tag Archives: منعقد

پنجاب حکومت کا بابا گرونانک کے 550ویں جنم دن کی مناسبت سے سکھ کنونشن منعقد کرانے کا فیصلہ،وزیراعلیٰ نے منظوری دے دی

لاہور22 اگست:پنجاب حکومت نے بابا گرونانک کے 550ویں جنم دن کی مناسبت سے سکھ کنونشن منعقد کرانے کا فیصلہ کیا ہے-وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدارنے سکھ کنونشن کے انعقاد کی منظوری دے دی-ایک کنونشن گورنر ہاؤس لاہور اور دوسرا ننکانہ صاحب میں ہوگا-کنونشن میں دنیا بھر سے سکھ برادری شرکت کرے گی-وزیراعلیٰ نے کنونشن کے لئے بہترین انتظامات کرنے کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ سکھ زائرین کوکنونشن میں شرکت کے لئے ممکنہ سہولتیں فراہم کی جائیں گی-
انہوں نے کہاکہ ننکانہ صاحب میں سڑکوں کی تعمیر ومرمت پر 15کروڑ روپے خرچ کئے گئے ہیں اورسڑکوں کی تعمیر و مرمت

سے ننکانہ صاحب میں آنے والے سکھ زائرین کوآمدورفت میں سہولت ہو گی-انہوں نے کہاکہ ننکانہ صاحب میں باباگرونانک یونیورسٹی کا سنگ بنیاد مذہبی رواداری کا منہ بولتا ثبو ت ہے-وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں سکھ برادری اور دیگر اقلیتوں کو ہر طرح کی سہولتیں دے رہے ہیں .عوام کی شکایات کے ازالے اور اداروں کی کارکردگی کی مانیٹرنگ کے لئے جدید نظام وضع کرنے کا فیصلہ:پنجاب حکومت نے عوام کے مسائل کے فوری حل او رشکایات کے جلد ازالے کے لئے جدیدمانیٹرنگ نظام وضع کرنے کافیصلہ کیا ہے-وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار نے عوام کی شکایات کے ازالے اور اداروں کی کارکردگی کی مانیٹرنگ کے لئے جدید نظام وضع کرنے کی منظوری دے دی ہے-وزیراعلیٰ نے کہاکہ مانیٹرنگ کے نئے نظام کا آغاز لاہور سے کیا جائے گا اورابتدائی طورپر واسا، ایل ڈی اے،ایل ڈبلیوایم سی اور پی ایچ اے کی کارکردگی مانیٹرکی جائے گی، جبکہ مرحلہ وار پروگرام کے تحت اس نظام کو دیگر اداروں اور شہروں تک وسعت دی جائے گی-جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے اداروں کی کارکردگی او رعوامی شکایات کے ازالے کے لئے ڈیٹاجمع کیاجائے گا-وزیراعلیٰ نے اس ضمن میں موبائل ایپ ڈویلپ کرنے کی ہدایت کی ہے اوراربن یونٹ کو نئی ایپ ڈویلپ کرنے کا ٹاسک سونپ دیا گیا ہے-وزیراعلیٰ نے کہاکہ نئے نظام کو منفرد ہونا چاہیے اور
نئے نظام پر عملدرآمد کر نے کا موثر میکنزم تشکیل دیاجائے-جمع ہونے والے ڈیٹا کی مدد سے فیصلہ سازی اور مستقبل کا روڈ میپ متعین کرنے میں آسانی ہوگی-انہوں نے کہاکہ ای سروس ڈلیوری کے ذریعے عوام کو سہولت ملے گی-انہوں نے کہاکہ ہم نے سمارٹ سٹیزکی طرف جانا ہے اورسمارٹ سٹیز میں شہریوں کو وہ سہولت دی جائے گی جو نئے دور کا تقاضا ہے-مقبوضہ کشمیر میں مسلسل 3 ہفتے سے جاری کرفیو سے انسانی المیہ جنم لے سکتا ہے:وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہاہے
کہ کیا عالمی برادری اور انسانی تہذیب کے نام نہاد علمبردار کشمیریوں کی شہادت کا انتظار کر رہے ہیں؟ -مقبوضہ جموں و کشمیر میں مسلسل 3 ہفتے سے جاری کرفیو سے انسانی المیہ جنم لے سکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ کشمیریوں کو خوراک، ادویات اور ضروریات زندگی سے محروم کرنا بھارتی وحشت کو آشکار کر رہا ہے۔ کیا ظلم و جبر سے پھول کھلیں گے یا تشدد جنم لے گا؟ ہر عمل کا ردعمل ہوتا ہے، ظلم اور زیادتیوں کا رد عمل خوفناک ہو سکتا ہے۔ کشمیری معصوم صفت اور فطرت پرست ہیں،
انہیں تشدد پر نہ اکسایا جائے۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ نریندر مودی دور حاضر کے بدترین انتہاپسندبن چکے ہیں۔ مودی اخلاقی، سیاسی اور تہذیبی بنیادوں پر کشمیر کی جنگ ہار چکے ہیں۔ نریندر مودی کی کوتاہ بینی کا نتیجہ بھارت کے تقسیم کی صورت میں نکلے گا۔ مودی کا انڈیا اقلیتوں کیلئے جہنم سے کم نہیں۔ انہوں نے کہاکہ بھارت نے جنت نظیر وادی کشمیر کو بارود اور گولیوں سے دوزخ بنا دیا ہے-کشمیری عوام آزادی کی جنگ بہادری سے لڑ رہے ہیں – وزیراعلیٰ نے کہاکہ تنازع کشمیر بین الاقوامی مسئلہ بن کر سامنے آیا ہے اوراس مسئلے سے عالمی برادری اب نظریں نہیں چرا سکتی-
سابق حکمرانوں کی غلط پالیسیوں کے باعث ملک اپنی اصل منزل سے ہٹ گیا: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ وسائل کا رخ پسماندہ علاقوں کی ترقی کی جانب موڑ دیا ہے۔ماضی کے حکمرانوں کی غلط ترجیحات کے باعث پنجاب کے دور درازعلاقے ترقی سے محروم رہے اور سابق حکمرانوں کی غلط پالیسیوں کے باعث ملک اپنی اصل منزل سے ہٹ گیا۔ قومی وسائل کو نمائشی منصوبوں کی نذر کرکے ملک و قوم سے ظلم کیاگیا۔ سابق حکمرانوں نے عوام کے بنیادی مسائل کو یکسر نظر انداز کیا۔
عوام بنیادی ضرورتوں کو ترستے رہے۔ آج وزیراعلیٰ آفس میں مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت سابق دور کی غلطیوں اور خرابیوں کو دور کر رہی ہے۔ ترقیاتی منصوبے عوام کی حقیقی ضروریات کو  مدنظر رکھ کر ترتیب دیئے گئے ہیں اورتحریک انصاف کی حکومت تمام علاقوں کی یکساں ترقی پر یقین رکھتی ہے۔ترقی اورخوشحالی ہر شہر کے لوگوں کا بنیادی حق ہے۔ ہر ضلع کے عوامی مسائل حل کرنے کے لئے مربوط حکومت عملی بنائی ہے-عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں ان کی دہلیز پر فراہم کریں گے – صحت اور تعلیم کی سہولتوں کو مزید بہتر بنایا جائے گا-انہوں نے کہا کہ لینڈ ریکارڈ مینجمنٹ انفارمیشن سسٹم کے تحت دسمبر تک 115نئے اراضی سنٹر فعال ہوجائیں گے کیونکہ اراضی سنٹرز کی کمی کے باعث عوام کو مشکلات کا سامنا ہے-حکومت عوام کی سہولت کیلئے اراضی سنٹرز کی تعداد میں اضافہ کررہی ہے-انہوں نے کہا کہ نیا پاکستان عام آدمی کا پاکستان ہے۔پسماندہ علاقوں کی ترقی کیلئے جاری منصوبوں کی خود نگرانی کررہا ہوں۔ پسماندہ علاقوں کے عوام کی محرومیوں کوخوشحالی میں بدلیں گے۔



اسلام آباد میں بھارتی یوم آزادی کی تقریبات منعقد ہونگی یا نہیں ؟اہم فیصلے کر لئے گئے، جانتے ہیں جاتے جاتے ہائی کمشنر نے سفارتخانے میںکیا کام کیا؟

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی ہائی کمشنر اجے بساریہ وطن واپسی کیلئے پروگرام میں تبدیلی کے بعد گزشتہ شب اسلام آباد ایئرپورٹ سے غیر ملکی پرواز کے ذریعےدبئی روانہ ہوگئے، اس سے پہلے انہوں نےاسلام آباد سے بذریعہ موٹروے لاہور روانہ ہونا تھا جہاں سے براستہ واہگہ نئی دہلی جانا تھا، روانگی سے قبل بھارتی ہائی کمشنر نےہائی کمیشن میں ایک غیر رسمی تقریب میں عملے سے خطاب کیا،اس موقع پر ہائی کمیشن کے
عملے نےان سے وابستگی کے جذبات کااظہار کرتے ہوئے انہیں الوداع کیا،دریں اثناء معلوم ہوا ہے کہ بھارت کی یوم آزادی کے حوالہ سے ہائی کمیشن کی جانب

سے اسلام آباد میں تقریبات کومنسوخ کردیاگیا ہے،ذرائع کے مطابق بھارتی ہائی کمیشن 15اگست کواپنے یوم آزادی کی تقریب محدود سطح پر ہائی کمیشن میں ہی کریگا۔یا درہے کہ مقبوضہ کشمیر سے متعلق اقدامات کے بعد پاکستان نے بھارت سے تمام تعلقات منقطع کر دئیے تھے ۔



شہباز شریف کی صدارت میں پی اے سی کی افادیت ختم ہوگئی، قوم کی دولت لوٹنے والے مزے میں،9ماہ کے دوران کتنے اجلاس منعقد ہوئے؟حیرت انگیز انکشافات

اسلام آباد (آن لائن)کرپشن اور بد دیانتی کے مقدمات میں ملوث شہباز شریف کے چیئرمین بننے کے بعد پبلک پبلک اکاؤنٹس کمیشن (پی اے سی) کی افادیت ختم ہوکر رہ گئی ہے۔ گزشتہ 9ماہ کے دوران پی اے سی کے صرف چار اجلاس منعقد ہوئے ہیں جبکہ کرپشن اور بددیانتی اور مالی بے گاعدگیوں کے متعلق پانچ ہزار آڈٹ پیراؤں پر تحقیقات نہ ہوسکیں جس کے نتیجہ میں قوم کی 20ہزار ارب روپے کی کرپشن اور نہ لوٹی ہوئی دولت واپس ہوئی ہے اور نہ ہی کرپٹ لوگوں پر ہاتھ ڈالا گیا ہے۔
اپوزیشن کے اصرار اور احتجاج کے بعد شہباز

شریف کو پی اے سی کا چیئرمین تو بنا لیا گیا لیکن ان کے چارج سنبھالنے کے بعد اس اہم پارلیمانی کمیٹی کی افادیت ختم ہو کر رہ گئی ہے جس کے نتیجہ میں نواز شریف دور کے 20ہزار ارب کرپشن کے متعلق آڈٹ پیراؤں پر نہ کوئی فیصلہ ہوا ہے کیونکہ اس کمیٹی کا کوئی اجلاس ہی نہیں ہوسکا۔ شہباز شریف خو بھی منی لانڈنگ کرپشن اور بد عنوانی کے درجنوں مقدمات میں ملوث ہیں۔ موصوف چیئرمین بننے کے بعد لندن بھاگ گئے تھے جس کے بعد اس اہم کمیٹی کا نہ کوئی اجلاس طلب کیا گیا ہے اور نہ کوئی اہم پیش رفت ہوئی ہے اب موصوف نے استعفٰی دے کر رانا تنویر کو کمیٹی کا چیئرمین بنا دیا ہے تاہم رانا تنویر بھی کرپشن میں ملوث رہے ہیں اور بھاری اثاثے بنائے ہیں۔ ان کی کرپشن فلور ملوں کے متعلق مشہور ہے۔ عمران خان کی حکومت بھی پی اے سی کو سرگرم کرنے کیلئے کوئی خاص دلچسپی نہیں لے رہی۔ سابقہ چیئرمین پی اے سی خورشید شاہ دور میں کمیٹی کے تواتر کے ساتھ اجلاس ہوتے تھے اور کئی اہم کرپشن کے مقدمات نیب کو بھیجے گئے تھے۔ ذرائع نے بتایا کہ 20ہزار روپے کی کرپشن، مالی بد عنوانی اور بے قاعدگیوں کے پیرائے موجود ہیں لیکن چیئرمین نہ ہونے کی وجہ سے اس بارے فیصلہ نہیں ہوسکا ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ کسی دیانتدار ممبر قومی اسمبلی کو اس اہم کمیٹی کا سربراہ بنا کر قوم کی لوٹی وہئی دولت واپس لائی جائے۔