Tag Archives: پاکستان

پاکستان سپر لیگ میں ساڑھے 13ارب روپے سے زائد کی بے ضابطگیوں کا انکشاف

اسلام آباد (این این آئی)پاکستان سپر لیگ ( پی ایس ایل )میں ساڑھے 13ارب روپے سے زائد کی بے ضابطگیوں کا انکشاف ہوا ہے جس کے بعد آڈیٹر جنرل نے پاکستان کرکٹ بورڈ ( پی سی بی) کو معاملات کی تحقیقات کی سفارش کردی ہے۔ نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق آڈیٹر جنرل نے پاکستان سپر لیگ کے پہلے دو آڈیشنز کا آڈٹ مکمل کرلیا ہے پی ایس ایل کی آڈٹ رپورٹ بھی منظر عام پر آگئی ہے ،پاکستان سپر لیگ کی
آڈٹ رپورٹ کے مطابق فرنچائزز کی نیلامی غیر منصفانہ طریقے سے کی گئی ،فرنچائزز کو طے شدہ حصے

سے زائد ادائیگیاں کی گئیں اور دوسری طرف فرنچائزز سے مکمل وصولیاں بھی نہ کی جا سکیں۔آڈیٹر جنرل نے پی ایس ایل میں خدمات انجام دینے والے صحافیوں کو دی جانیوالی رقم بھی غیر قانونی قرار دیدی ہے۔رپورٹ کے مطابق پی ایس ایل کی تشہیر ی مہم ،نشریاتی حقوق ،میڈیا رائٹس اورکیش اے کروڑ میں لاکھوں ڈالرز کی بے ضابطگیاں ہوئیں۔آڈٹ رپورٹ کے مطابق پی ایس ایل ون میں 97 کروڑ 42 لاکھ آمدن اور 90 کروڑ 80 لاکھ روپے کے اخراجات ہوئے۔پی ایس ایل ٹو میں 1 ارب 46 کروڑروپے آمدن اور1 ارب 6 کروڑ روپے کیاخراجات ہوئے۔یوں مجموعی طور پر پی ایس ایل کے پہلے دو آڈیشنز میں 47 کروڑ کمائی ہوئی۔ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ فرنچائزز کو شیئر سے24 کروڑ 86لاکھ روپے زائد ادائیگیاں کی گئیں۔فرنچائزز کو 5 کروڑ 44 لاکھ زر تلافی دئیے گئے۔آڈٹ رپورٹ کے مطابق لاہور میں پی ایس ایل فائنل کے اخراجات کا غلط تخمینہ لگایا گیا،لاہور میں کھیلے گئے فائنل میں ایک کروڑ 88 لاکھ زائد اخراجات آئے۔رپورٹ میں بتایا گیاکہ پی ایس ایل میں خدمات انجام دینے والے صحافیوں کو غیر قانونی طور پر سوا کروڑ روپے ادا کئے گئے۔اسی طرح نشریاتی حقوق کے حوالے سے بھی سو کروڑ ڈالرز سے زائد کے بی ضابطگیاں سامنے آئی ہیں۔آڈیٹر جنرل نے پاکستان کرکٹ بورڈ ( پی سی بی) کو معاملات کی تحقیقات کی سفارش کردی ہے۔



پاکستان پیپلز پارٹی کی معروف رکن قومی اسمبلی کا گھر کنڈا کنکشن سے چلنے انکشاف ،قومی خزانے کو ماہانہ لاکھوں روپے کا ٹیکہ

سکھر(این این آئی)پاکستان پیپلز پارٹی کی رکن قومی اسمبلی شازیہ سومرو کا گھر کنڈا کنکشن سے چلنے انکشاف ہوا ہے۔یہ انکشاف سکھر الیکٹرک سپلائی کمپنی (سیپکو) کی پنوعاقل میں بجلی چوروں کے خلاف کارروائی کے دوران ہوا۔چوری کی بجلی سے گھر میں موجود ایئر کنڈیشنز اور دیگر برقی آلات سے قومی خزانے کو ماہانہ لاکھوں روپے کا ٹیکہ لگایا جارہا تھا۔
سیپکو کے مطابق رکن قومی اسمبلی کے گھر کے چار غیرقانونی کنکشن کاٹ دیئے ہیں۔اس کے علاوہ پیپلزپارٹی کے رہنما آفتاب سومرو کے گھر کا کنکشن بھی کاٹا گیا ہے۔سیپکو نے بتایا کہ پانچ لاکھ سے زائد بقایا جات کی

وجہ سے آفتاب سومرو کا کنکشن کاٹا گیا ہے۔سیپکو چیف کے حکم پر بجلی چوروں اور نادہندگان کے خلاف آپریشن کیا جارہا ہے۔



دو ایٹمی طاقتیں لڑیں گی تو انجام بھیانک ہوگا،بھارت افغانستان میں بیٹھ کر پاکستان میں دہشت گرد کارروائی کرتا ہے، عمران خان کا انٹرویو،کھری کھری سنادیں

ا سلام آباد (این این آئی)وزیراعظم عمران خان نے ایک مرتبہ پھر عالمی برادری کو خبردار کیا ہے کہ بھارت کے اقدامات کی وجہ سے پاکستان اور بھارت جنگ کے دہانے پر ہیں، اگر دو ایٹمی طاقتیں لڑیں گی تو انجام بھیانک ہوگا،کشمیر اقوام متحدہ میں تسلیم شدہ ایک متنازع علاقہ ہے، اقوام متحدہ کی اس حوالے سے متعدد قراردادیں موجود ہیں، عالمی برادری کردارادا کرے،ہمیں بھارت سے لاتعداد شکایتیں ہیں،
یہ افغانستان میں بیٹھ کر پاکستان کے قبائلی علاقوں اور بلوچستان میں دہشت گرد کارروائی کرتا،پاکستان پر افغانستان میں امریکا کی ناکامی کا الزام ناانصافی ہے۔غیر ملکی خبر رساں ادارے

کو دئیے گئے اپنے انٹرویو میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان نے کشمیر کا مسئلہ اقوام متحدہ میں اٹھا دیا ہے،پاکستان ایسی قوم ہے جو اپنی بقا کیلئے آخری دم تک لڑے گی۔انہوں نے کہاکہ دو ایٹمی طاقتیں جنگ کے دہانے پر ہیں اگر یہ طاقتیں لڑیں گی تو انجام بھیانک ہوگا، تاہم ایٹمی جنگ سے بچنے کے لیے عالمی برادری اپنا کردار ادا کرے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کوئی بھی ذی شعور انسان ایٹمی جنگ کی بات نہیں کرسکتا۔انہوں نے پاک بھارت کشیدگی کو امریکا اور روس کے درمیان 1962 کے کیوبن میزائل بحران سے تشبیہ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان صورتحال بہت کشیدہ ہے، اور اگر ان دونوں ممالک کے درمیان جنگ ہوئی تو اس کے اثرات برصغیر کے باہر بھی محسوس کیے جاسکیں گے۔جب ان سے سوال کیا گیا کہ بھارت کشمیر کو اپنا اندرونی معاملہ کہتا ہے تو اس پر عالمی برادری کس طرح بات کریگی جس کا جواب دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کشمیر اقوام متحدہ میں تسلیم شدہ ایک متنازع علاقہ ہے، اور اقوام متحدہ کی اس حوالے سے متعدد قراردادیں موجود ہیں انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ یہاں صرف بیانات دینے کے بجائے اسے حل کرنے کا عملی مظاہرہ کرے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ میں اس معاملے کو اقوام متحدہ میں اٹھاؤں گا اور وہاں جاکر یہ کہوں گا کہ یہ عالمی برادری کی ذمہ داری ہے کہ اس معاملے کو حل کروائے۔
وزیراعظم نے کہا کہ بھارت میں اس وقت آر ایس ایس نظریے کی حکومت ہے جو نازی جرمنی کے نظریے سے متاثر ہے۔انہوں نے کہا کہ آر ایس ایس کے کیمپ میں ایسے دہشت گرد تیار ہورہے ہیں جو اپنے تشدد سے مسلمانوں کو خوفزدہ کر رہے ہیں، جس کی وجہ سے نہ صرف کشمیروں بلکہ بھارت اور پوری دنیا میں رہنے والے مسلمانوں کی طرف سے اس کا رد عمل آئیگا۔ انہوں نے کہا کہ یہ ری ایکشن اس لیے آئیگا کیونکہ مسلمان پہلے ہی روہنگیا مسلمانوں کے ساتھ ہونے والے مظالم دیکھ چکے ہیں۔
وزیراعظم نے کہا کہ یہ اب عمل کا وقت ہے، کیونکہ مجھے ایسا لگتا ہے کہ عمل نہ کرنا کوئی آپشن نہیں ہے۔جب ان سے سوال کیا گیا کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر کے مسلمانوں کی کس طرح مدد کر رہا تو جواب میں وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان اس وقت کچھ نہیں کر سکتا، بھارت نے تمام سرحدیں بند کی ہوئی ہیں، پاکستان عالمی برادری کو معاملے آگاہ کر رہا ہے اور اسے ہر فورم پر اٹھارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ اب یہ معاملہ دوطرفہ بات چیت سے حل نہیں ہوسکتا، بات اس سے آگے نکل چکی ہے، اس کے حل کا راستہ صرف امریکا ہے۔
وزیراعظم نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ ساتھ روسی صدر ویلادی میر پیوٹن اور چینی صدر شی جن پنگ وہ بڑی شخصیات ہیں جو مقبوضہ کشمیر کا مسئلہ حل کروانے کے لیے اپنا کردار ادا کر سکتے ہیں۔مسئلہ کشمیر کا حل بتاتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ اس کا صرف ایک ہی حل ہے اور وہ اقوام متحدہ کا کشمیری عوام کے ساتھ کیا جانے والا وعدہ ہے، جو انہوں نے کشمیری عوام کے حق خودارادیت سے متعلق کیا ہے۔مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے سے متعلق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ نریندر مودی نے بہت بڑی غلطی کردی کیونکہ یہاں سے آگے جانے اور پیچھے جانے میں مودی کا بہت بڑا نقصان ہے۔
انہوں نے کہا کہ رواں برس فروری میں جب پلوامہ حملہ ہوا تو اس کے بعد بھارت نے پاکستانی حدود کی خلاف ورزی کی جبکہ پاکستان انہیں مسلسلہ کہتا رہا کہ اگر آپ کے پاس کسی پاکستانی کے ملوث ہونے کا ثبوت ہے تو ہمیں دیں ہم کارروائی کریں گے۔وزیراعظم نے کہا کہ بھارت نے ایک مرتبہ پھر دراندازی کی کوشش کی تو بھارتی طیارے کو مار گرایا اور جب پاکستان نے اس گرفتار بھارتی پائلٹ کو خیر سگالی کے جذبے کے تحت واپس کیا تو انہوں نے اسے اپنی کامیابی قرار دیا اور کہا کہ پاکستان ان سے ڈر گیا۔جب ان سے سوال کیا گیا کہ بھارت یہ الزام عائد کرتا ہے کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر میں صورتحال خراب کرنے کا ذمہ دار ہے تو وزیراعظم نے جواب دیا کہ
پاکستان ایسی کسی کارروائی میں ملوث نہیں ہے، ہم نے نریندر مودی کو یہ پیشکش کی کہ وہ اپنی انٹیلی جنس اور کسی بھی مبصر کے ذریعے اس کا پتہ لگالیں۔اپنی بات کی وضاحت دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ 1980 کی دہائی میں پاکستان، سویت یونین کے خلاف جنگ میں امریکا اور افغانستان کا سب سے بڑا اتحادی تھا۔انہوں نے کہا کہ اس عرصے میں یہاں مجاہدین کو تربیت دی گئی، اور جب سویت یونین یہاں سے چلا گیا تو ان لوگوں کو پاکستان کے ساتھ چھوڑ دیا گیا، تاہم اب تحریک انصاف کی حکومت وہ پہلی حکومت ہے جس نے عسکریت پسندوں کے خاتمے کے لیے اقدامات اٹھائے۔وزیراعظم نے کہاکہ ہمیں بھارت سے لاتعداد شکایتیں ہیں، یہ افغانستان میں بیٹھ کر پاکستان کے قبائلی علاقوں اور بلوچستان میں دہشت گرد کارروائی کرتا ہے،
ہم نے سب سے پہلے بیٹھ کر دہشت گردی پر بات کرنے کا کہا ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کا نائن الیون کے واقعہ سے کوئی تعلق نہیں تھا، پاکستان دہشت گردی کے خلاف اس جنگ میں شامل ہوا اور جب امریکا وہاں کامیاب نہ ہوسکا تو اس کا الزام بھی پاکستان پر عائد کیا جارہا ہے جو سراسر ناانصافی ہے۔انہوں نے کہا کہ ٹرمپ انتظامیہ افغانستان کی فطرت کو سمجھ نہیں سکی، افغان کسی بھی غیر ملکی کو برداشت نہیں کرتے، سویت نے وہاں 9 سال جنگ لڑی لیکن 50 ہزار فوجی مارے جانے کے باوجود وہ اسے ’فتح‘ نہ کرسکے۔جب ان سے سوال کیا گیا کہ کیا پاکستان افغانستان سے امریکی فوج کے انخلا کی حمایت کرتا ہے تو اس کے جواب میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ یہ انخلا ایک منصوبہ بندی کے ساتھ اور معاہدے کے تحت ہونا چاہیے۔انہوں نے کہاکہ گزشتہ 4 دہائیوں
سے افغانستان کے لوگ خون خرابہ دیکھ رہے ہیں، وہ اب امن چاہتے ہیں اور ہم سب دعا گو ہیں کہ طالبان اور امریکا کے درمیان امن عمل دوبارہ بحال ہوجائے۔جب وزیراعظم سے امریکا کے سابق سیکریٹری دفاع جیمز میٹس کے پاکستان کو سب سے خطرناک ملک قرار دینے سے متعلق سوال کیا گیا تو انہوں نے جواب دیا کہ اگر پاکستان امریکا کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شامل نہ ہوتا تو وہ آج دنیا کا خطرناک ملک نہ ہوتا۔انہوں نے اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ میں ایک مرتبہ پھر واضح کرنا چاہتا ہوں کہ میں پاکستان کے امریکا کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شامل ہونے کے خلاف تھا۔انہوں نے کہاکہ جب پاکستان اس جنگ میں شامل ہوگیا تو سویت یونین کے خلاف جنگ میں حصے لینے والے پاکستان کے خلاف ہوگئے۔روس اور پاکستان کے تعلقات سے متعلق سوال پر انہوں نے کہا کہ دنیا اب تبدیل ہوچکی ہے، اس کے ساتھ تعلقات میں بہتری کی امید ہے۔

موضوعات:

loading…



کشمیر کے معاملے پر پاکستان نے بہت دیر کر دی، اب کیا ہوگا؟سابق وزیر خارجہ حسین ہارون کے انتہائی تشویشناک انکشافات

کراچی(این این آئی)پاکستان کے سابق وزیر خارجہ حسین ہارون نے کہا ہے کہ پاکستان نے کشمیر کے معاملے پر بہت دیر کر دی ہے پاکستان کو فوری ردعمل دینا چاہیے تھا۔ایک انٹرویو میں سابق وزیر خارجہ حسین ہارون نے کہا کہ میں تو بہت پہلے سے کہہ رہا تھا پاکستان کو تیار رہنا چاہیے کیونکہ ہندوستان کے ارادے درست نہیں تھے۔
انہوں اے کہاکہ بھارتی انتخابات کے موقع پر عمران خان کے مودی کی حمایت میں بیان ان کی غلط فہمی تھی۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نے کشمیر کا سفیر بننے ک اعلان کر رکھا ہے تاہم ہمیں اپنی

حکمت عمل پر بھی غور کرنا چاہیے کہ وہ کارآمد بھی ہے یا نہیں۔حسین ہارون نے کہا کہ بھارتی عزائم کافی عرصے سے نظر آ رہے تھے اور ان کے بیانات سے لگ رہا تھا کہ وہ تیاری کر رہے ہیں تاہم اس حوالے سے پاکستان کی کوئی تیار نظر نہیں آ رہی تھی اور پاکستان اب بھی تیار نظر نہیں آ رہا، حکومت پہلے یہ تو طے کر لے کہ اس نے کرنا کیا ہے؟سابق وزیر نے کہا کہ پاکستان کو طالبان امریکہ مذاکرات میں کردار ادا کرنے سے قبل یہ شرط رکھنی چاہیے تھی کہ وہ پہلے آپ پر سے ایف اے ٹی ایف کی سختیوں کو ختم کرے۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان کا گلا پھندے میں آیا ہوا ہے اور پاکستان کو چاہیے کہ وہ معاملے پر سخت اقدامات کرے تاکہ بھارت کے پاس کوئی جواز نہ رہے۔حسین ہارون نے کہا کہ دنیا عمران خان کو پہلے سے جانتی ہے اور وہ یورپ اور امریکی میں جانا پہچانا برانڈ ہے تاہم کیا انہوں نے اپنی شہرت کا فائدہ اٹھایا؟ عمران خان اگر سفیر بن کر نکل پڑیں گے تو پاکستان کو کون چلائے گا؟انہوں نے کہا کہ پاکستان کو بھارتی جارحیت کا فوری جواب دینا چاہیے تھا لیکن پاکستان نے بہت دیر کر دی اور جوں جوں معاملے میں تاخیر ہوتی رہے گی معاملہ آپ کے ہاتھ سے نکل جائے گا۔



دورہ پاکستان میں سکیورٹی کا خطرہ نہیں بلکہ ہماری توجہ کس چیز پر ہے ؟سری لنکن کپتان نے واضح کر دیا

لاہور(آن لائن) سری لنکن ون ڈے کپتان لہیرو تھریمانے نے کہا ہے کہ پاکستان میں ٹو ر کے دوران میری توجہ کا مرکز سکیورٹی نہیں بلکہ صرف کرکٹ ہے ۔ہفتہ کو سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک بیان میں سری لنکن ون ڈے کرکٹ ٹیم کے کپتان لہیروتھریمانے نے کہا کہ کرکٹ سری لنکا نے پاکستان میں
حفاظتی انتظامات سے آگاہ کردیاہے‘جس پر مکمل اطمینان ہے‘میری ساری توجہ کھیل پر مرکوز ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے پاکستان جانے پر فیملی کو کوئی اعتراض نہیں کیونکہ ہم سب اپنے ملک کی نمائندگی کر رہے ہیں ‘10کھلاڑیوں کا دورے سے

انکار ان کا ذاتی معاملہ ہے ‘جس کا احترام کرنا چاہئے۔



طاہرالقادری کا سیاست سے کنارہ کشی کا اعلان ‎، وجہ کیا بنی؟سربراہ پاکستان عوامی تحریک نے خود ہی بتا دیا‎

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) طاہر القادری کا سیاست اور سیاسی سرگرمیوں سے کنارہ کشی کا اعلان ،نجی ٹی وی کے مطابق پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ کا ویڈیو کانفرنس کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ہم نے کرپشن کے خلاف عوامی شعور بیدار کرنے میں بھرپور کردار ادا کیا، پارلیمنٹ کا حصہ بن کر سب کچھ اپنی آنکھوں سے دیکھا، پارلیمنٹ میں سب کچھ ہوتا ہے لیکن عوامی فلاح اور بہبود کے لیے کچھ نہیں ہوتا۔ بدقسمتی سے ہماری سیاست
میں غریب اور متوسط طبقے کی کوئی گنجائش نہیں ، زیادہ تر ارکان پارلیمنٹ صرف اور صرف اقتدار کے لیے

زندہ رہتے ہیں۔ سانحہ ماڈل ٹاؤن کی شہادتیں تحریک کی جاری جدوجہد کا ایک نتیجہ تھیں، 3 ماہ تک عوامی شعور بیدار کرنے کے لیے اسلام آباد میں دھرنا بھی دیا گیا جس کے نتیجے میں احتساب کا ایک عمل شروع ہوا۔ مجھے تصنیف وتالیف کے بے پناہ کام اور صحت کے مسائل ہیں اس لیے سیاست اور سیاسی سرگرمیوں سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کرتا ہوں۔



جس نے پاکستان کے خلاف بات کی وہ ملک دشمن غدار ہے،تحریک انصاف کا بلاول زرداری کے بیان پر شدید ردعمل سامنے آگیا

کراچی (این این آئی) تحریک انصاف سندھ کے صدراورسندھ اسمبلی میں پارلیانی لیڈر حلیم عادل شیخ نے کہا ہے کہ بابائے 18وین ترمیم میاں رضا ربانی سے پوچھنا چاہتا ہوں کہ اگر آرٹیکل 149 اتنا ہی غلط تھا تو بلاول صاحب کے نانا صاحب نے کیوں آئین میں ڈالا، اس آرٹیکل کے تحت وفاق نے ڈائریکشن دینی تھی کہ حالات بہتر کئے جائیں جو ابھی تک نافذ نہیں کیا گیا ہے۔ اگر وفاق سندھ کی بھلائی کے لئے کوئی ہدایات جاری کرتا ہے تو اس میں سندھ کو کوئی خطرہ نہیں ہے،
بلاول زرداری نے اپنے بیان سے ثابت کر دیا

ہے کہ وہ بینظیر بھٹو کے پیروکار نہیں بانی ایم کیو ایم کے پیروکار ہیں، بانی ایم کیو ایم نے جناح پور کی بات کی تھی بلاول بھٹو نے سندھو دیش کی بات کی ہے جانتے ہیں مضبوط صوبے مضبوط پاکستان کی ضمانت ہیں، جس نے سندھ کے خلاف بات کی جس نے پاکستان کے خلاف بات کی وہ ملک دشمن غدار ہے۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے سندھ اسمبلی میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پرسندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف فردوس شمیم نقوی بھی موجود تھے۔ حلیم عادل شیخ نے کہاکہ یہ بھٹو کا پاکستان نہیں ہے نہ ہی یہ 1971 ہے یہ کپتان کا پاکستان ہے یہ نیا پاکستان ہے 22 کروڑ عوام عمران خان کے ساتھ ہے۔کچھ لوگ ہیں جو اپنے کرپٹ سیاستدانوں کو بچانے کی لئے ایسا کر رہے ہیں۔ زرداری صاحب نے پاکستان کھپے کا نعرہ لگایا تھا ہم سمجھ رہے تھے کہ زرداری پاکستان کو چاہتے ہیں اس نعرے کا مطلب اب سمجھ آیا ہے کہ انہوں نے پاکستان فروخت کرنے کا نعرہ لگایا تھا پوری سندھ پیپلزپارٹی نے فروخت کر دی ہے اومنی گروپ کو زرداری گروپ کو۔ اس وقت پاکستان مضبوط ہاتھوں میں  پہاڑوں پر بھی جگہ نہیں ملے گی جو پاکستان نہ کھپے کا نعرہ لگائیں گے، کل صدر مملکت کی تقریر ہوئی اس کے دوران تماشا لگایا گیا  پیپلزپارٹی ملک دشمن پارٹی ثابت ہوئی ہے  جس طرح اسمبلی میں بات کی گئی ہے اس کو انڈیا کے چینل پر دکھایا گیا ہے  نواز شریف نے بھی ملک دشمنی کا ثبوت دیا ہے۔
سندھ حکومت اپنی ناکامی اپنی نااہلی اس اشو کے پیچھے چھپانا چاہتی ہے ہم سندھ حکومت کے خلاف تحریک چلائیں گے احتجاج کریں گے جنہوں نے سندھ کو ایڈز لگا دیا عوام کو اپنے حقوق سے محروم رکھا ہے۔ پیپلزپارٹی کے حکمران سندھ اربوں روپے کرپشن کر کے کھا گئے کراچی کو آفریکا کے بعد دنیا کا پانچواں گندا شہر بنا دیا ہے فروغ نسیم کی اپنی پارٹی ہے اس نے جو بیان دیا اس کو کلیئر بھی کر دیا ہے جس توڑ مروڑ کے پیش کیا گیا۔ بلاول زرداری اپنے بیان پر قوم سے معافی مانگی جنہوں نے بیان دیکر ملک دشمنی کا ثابت دیا ہے۔
کپتان کی ٹیم سندھ کے وفاداروں کی ٹیم ہے پاکستان کے وفادار کی ٹیم ہے۔ اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی کے بات کرتے ہوئے کہا کل ہم نے کراچی کمیٹی کے بارے میں بات چیت کی تھی آئین کے پرنسپل آف پالیسی29 سے 38 تک اس کے تحت ہم بیحیث پارلیامنی ممبران سندھ ہیں  یہ ائیں جو عوام کے حقوق کو تحفظ دیتا ہے جس کی بے تحاشہ پامالی ہورہی ہے کراچی میں پانی کی صورتحال دن بہ دن خراب ہورہی ہے۔ کراچی کو 600 ملین گین کی پانی دینے کی بات کی تھی پتا نہیں یہ پانی کب ملے گا پانی کی قلت کی وجہ شہر کراچی کو خطرہ لاحق ہے۔
کراچی اسٹریٹیچک کمیٹی اپنا کام شروع کر چکی ہے ماضی کی طرح ہر اچھے قدم کو متناضہ بنانے کے لئے کچھ نہ کچھ کیا جاتا ہے۔ ہم نے آج ایک قرارداد سندھ اسمبلی میں داخل کی ہے  جس میں ہم نے اس بات کی مذمت کی ہے کہ سندھ تقسیم کے خلاف ہیں۔ اس ایوان میں ہم نے پہلے بھی قرارداد پاس کی ہیں کہ سندھ کی تقسیم نہیں کرنے دیں گے، سندھ پاکستان کا حصہ اور جو سندھ کو پاکستان سے الگ کرنا چاہتا ہے ہم اس شخص کی شدید مذمت کرتے ہیں جو یہ بات بھی کرتا ہے یہ اس بات کو فروغ دیتا ہے کہ ایسی سوچ اندرون سندھ میں بڑھ رہی ہے وہ پاکستان دشمن ہیں۔ آئین پاکستان اس بات کی ضمانت دیتا ہے کہ پاکستان کی سالمیت پر کوئی حملہ کرے اس پر غداری کا لفظ استعمال کیا گیا جو شخص کسی بھی طریقے سے پاکستان کی سالمیت کے خلاف بات کرے گا ہم مجبور ہونگے اس کو غدار کہیں گے، جو شخص اس سندھ صوبے کے عوام کے حقوق کی پائمالی کرے گا وہ دشمن کہلائے گا، جو لوگ بنگلادیش اور سندھو دیش کی بات کرتے ہیں وہ ملک کے دوست نہیں ہیں پیر کو سندھ اسمبلی میں اس پر مزید بحث کریں گے قرارداد پیش کر دی گئی ہے۔

موضوعات:

loading…



اب پاکستان کی معاشی صورتحال کیسی ہے؟عالمی ریٹنگ ادارے کا پاکستانی معیشت پر تجزیہ،حیرت انگیز انکشافات

اسلام آباد(آن لائن) عالمی ریٹنگ کے ادارے موڈیز کا پاکستان کی معیشت پر تجزیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان نے درآمدات میں کمی سے زرمبادلہ کے ذخائر بڑھیں گے لیکن زرمبادلہ کے ذخائر قرض کی ادائیگیوں کے حساب سے کم ہیں۔ جس سے غیر ملکی ادائیگیوں سے جاری کھاتوں کے خسارے میں اضافے کا خدشہ ہے۔
تفصیلات کے مطابق جمعہ کے روز عالمی ریٹنگ کے ادارے موڈیز نے پاکستان کی معیشت پر تجزیہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس وقت روپیہ ضرورت کے مطابق اپنی قدر کا خود تعین کرے گا لیکن درآمدات میں کمی سے زرمبادلہ کے ذخائر

بڑھیں گے لیکن زرمبادلہ کے ذخائر قرض کی ادائیگیوں کے حساب سے کم ہیں۔ جس سے غیر ملکی ادائیگیوں سے جاری کھاتوں کے خسارے میں اضافے کا خدشہ ہے۔ موڈیز نے مزید کہا کہ آئی ایم ایف کے 6 ارب ڈالر سے ادائیگیوں سے سہارا ملا اور دیگر ذرائع سے ملنے والے قرض سے بھی مدد ملی لیکن شرح سود بڑھنے سے مالیاتی مشکلات میں اضافہ ہوا ہے۔ موڈیز کے مطابق دو سال میں شرح سود ساڑھے 7 فیصد بڑھا ہے اور حکومتی بانڈز کی شرح سود بھی مسلسل بڑھ رہی ہے۔ شرح سود بڑھنے سے مقامی قرضوں میں بے پناہ اضافہ ہو رہا ہے۔ عالمی ریٹنگ کے ادارے موڈیز کا پاکستان کی معیشت پر تجزیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان نے درآمدات میں کمی سے زرمبادلہ کے ذخائر بڑھیں گے لیکن زرمبادلہ کے ذخائر قرض کی ادائیگیوں کے حساب سے کم ہیں۔ جس سے غیر ملکی ادائیگیوں سے جاری کھاتوں کے خسارے میں اضافے کا خدشہ ہے۔ تفصیلات کے مطابق جمعہ کے روز عالمی ریٹنگ کے ادارے موڈیز نے پاکستان کی معیشت پر تجزیہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس وقت روپیہ ضرورت کے مطابق اپنی قدر کا خود تعین کرے گا



چلو کشمیر پاکستان کو نہیں چاہیے، انڈیا کو بھی کشمیر نہ دو لیکن۔۔۔! شاہد آفریدی کے بیان پر بھارتی میڈیا میں ہنگامہ، شدید ردعمل سامنے آ گیا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی میڈیا اخلاقیات بھی بھول بیٹھا، بھارتی میڈیا نے شاہد آفریدی کے خلاف منفی پروپیگنڈے کا آغاز کر دیا، ایک انڈین ٹی وی نے اپنی رپورٹ میں شاہد آفریدی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ کرکٹ کے میدان میں اپنی بدتمیزیوں کے بعد شاہد آفریدی اب عمران خان کے نقش قدم پر چل پڑے ہیں، بھارتی میڈیا نے کہا کہ شاہد آفریدی اب جہاد کی باتیں بھی کرنے لگے ہیں،
اس موقع پر انہوں نے شاہد آفریدی کے کشمیر کے حوالے سے بیانات کے کلپ بھی چلائے، بھارتی میڈیا نے کہا کہ لگتا ہے کہ

پاکستان کی راج نیتی میں عمران خان کے بعد ایک اور کرکٹر انٹری مارنے والا ہے، بھارت کے خلاف نعرے لگا کر شاہد آفریدی بھی اپنا چہرہ چمکانا چاہتے ہیں، بھارتی میڈیا نے کہا کہ ہم اس لیے یہ کہہ رہے ہیں کہ شاہد آفریدی عمران خان کے ساتھ سائے کی طرح چپکے ہوئے ہیں اور وہ ایسے بیانات دے رہے ہیں جس سے کٹر پن اور جہاد کی بو آتی ہے۔ واضح رہے کہ شاہد آفریدی نے کہا تھا کہ کشمیر ہمارے خون میں شامل ہے، واضح رہے کہ آج شاہد آفریدی نے مظفرآباد میں منعقد جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں کشمیر کے ساتھ ہوں میں ہر ظالم کے خلاف اور مظلوم کے ساتھ ہوں۔انہوں نے کہا کہ بات صرف کشمیر کی نہیں انسانیت کی ہے، دنیا کے کسی کونے میں بھی ظلم ہوگا ہم پاکستانی ہمیشہ ظلم کے خلاف اٹھائیں گے۔ بھارتی میڈیا نے شاہد آفریدی کے حوالے سے کہا کہ انہوں نے اپنے بیان میں کہا تھاکہ میں کہتا ہوں کہ چلوکشمیر پاکستان کو نہیں چاہیے، انڈیا کو بھی کشمیر نہ دو، لیکن کشمیر میں کشمیری رہیں اور انسانی آزادی دی جائے۔اب بھارتی میڈیا نے کہا کہ شاہد آفریدی نے یوٹرن لیتے ہوئے اپنے بیان میں کہا کہ کراچی سے لے کرخیبر تک ہم سب کشمیر کے ساتھ ہیں، کشمیر کے لوگوں کے ساتھ ہیں۔شاہد آفریدی انٹرنیشنل کرکٹرہیں لیکن کشمیر پر بیان بازی سے دنیا کا دھیان اپنی طرف کرنا چاہتے ہیں۔غرض بھارتی میڈیا شاہد آفریدی کے بیانات کو لے کر اسلام اور مسلمانوں کے خلاف پروپیگنڈے میں مصروف ہے۔



پاکستان کی وہ موٹر وے جہاں راستے میں بجلی کے کھمبے اور رکشے بھی نظر آئیں گے،مراد سعید نے اہم انکشافات کر دئیے

اسلام آباد (این این آئی) قومی اسمبلی کوبتایاگیا ہے کہ کراچی حیدرآباد موٹروے کو صحیح معنوں میں موٹروے نہیں کہا جاسکتا ہے، شاہراہ میں ہمیں بجلی کے کھمبے اور رکشے نظر آئیں گے۔جمعہ کو قومی اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران وفاقی وزیر مواصلات مراد سعید نے کہا کہ حیدرآباد کے قریب موٹروے کی سروس روڈ کو سیلاب سے نقصان پہنچا ہے۔
کراچی‘ حیدرآباد موٹروے کے کئی حصوں کو سیلاب سے نقصان پہنچا ہے، اس کی نگرانی کرتے رہیں گے۔ کراچی حیدرآباد موٹروے کو صحیح معنوں میں موٹروے نہیں کہا جاسکتا ہے۔ اس شاہراہ میں ہمیں بجلی کے کھمبے اور رکشے

نظر آئیں گے۔ اس منصوبے کو مناسب انداز میں مکمل نہیں کیا گیا۔ موجودہ حکومت اس معاملے کو حل کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ژوب کوئٹہ ‘ ڈی آئی خان شاہراہ ہماری ترجیح ہے۔ژوب کچلاک روڈ کا وزیراعظم نے افتتاح کر دیا ہے۔ اگلے مراحل کو سی پیک میں شامل کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ حکومت نے تو مغربی روٹ کا صرف اعلان کیا تھا وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں تحریک انصاف کی حکومت مغربی روٹ کو عملی جامہ پہنا رہی ہے۔پارلیمانی سیکرٹری خیال زمان نے بتایا کہ او جی ڈی سی ایل نے کوہاٹ میں14.95 ملین روپے اور کرک میں 187.11 ملین روپے صرف کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 120 بلاک اور 30 کمپنیوں کے حوالے سے وہ تفصیلات جلد ایوان میں فراہم کریں گے۔وفاقی وزیر مواصلات مراد سعید نے کہا کہ چمن کوئٹہ شاہراہ ایک اہم منصوبہ ہے جسے دو رویہ بنایا جارہا ہے‘ یہ منصوبہ بی اوٹی کی بنیاد پر مکمل ہوگا۔ مراد سعید نے کہا کہ یہ منصوبہ200 ارب روپے کی لاگت سے مکمل ہوگا۔
نیسپاک کو ہدف سونپا گیا ہے۔ 790 کلو میٹر طویل شاہراہ ایک اہم منصوبہ ہے۔ ماضی میں اسے نظرانداز کیا گیا ہے۔ موجودہ حکومت اس منصوبے کو عملی جامہ پہنا رہی ہے۔ منصوبے کے تحت شاہراہ کو دو رویہ بنا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ یہ منصوبہ بی او ٹی کی بنیاد پر مکمل ہوگا۔ کمرشل فزیبلٹی کا آغاز ہو چکا ہے اور بجٹ بھی مختص ہے۔ وفاقی وزیر عمر ایوب خان نے کہا کہ درآمدی کوئلے کی اجازت گزشتہ حکومت نے دی تھی۔
ہم امپورٹڈ فیول کی حوصلہ شکنی کر رہے ہیں۔ ہم تھرکول سمیت متبادل توانائی کو ترجیح دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حیسکو میں چیف فنانشل آفیسر کے حوالے سے تحقیقات شروع کی گئی ہیں۔ حکومت اس معاملے کے حوالے سے معلومات لے کر معاملات درست کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں بارش کے دوران بجلی سے ہلاکتوں کی تحقیقات ہوئی ہے۔
مزید کام بھی ہو رہا ہے۔ پیش رفت سے ایوان کو آگاہ کیا جائے گا۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کی پالیسیوں کی وجہ سے کمپنیاں خسارے میں ہیں جن کی بحالی کے لئے کام ہو رہا ہے۔ عمر ایوب خان نے کہا کہ نندی پور پاور پراجیکٹ 2017ء میں آر ایف او سے پہلے گیس اور پھر ایل این جی میں تبدیل ہوا۔ اس وقت اس سے پیدا ہونے والی بجلی کی قیمت کا تعین ایل این جی کی بنیاد پر ہے۔ ہماری انرجی پالیسی یہ ہے کہ درآمدی فیول پر انحصار بتدریج کم سے کم کیا جائے۔
اس وقت نندی پور پاور پراجیکٹ سے پیدا ہونے والی بجلی کی فی یونٹ قیمت 14.19 روپے ہے۔ پارلیمانی سیکرٹری عندلیب عباس نے بتایا کہ اس وقت علاقائی سالمیت اور سلامتی ہمارے لئے اہمیت کی حامل ہے۔ پاکستان نے امن کے سفیر کا کردار ادا کرنا ہے۔ ہماری پالیسی تجارت اور باہمی عزت و احترام کی بنیاد پر ہے۔ ایران کے ساتھ تعلقات پہلے اچھے نہیں تھے‘ وزیراعظم نے ایران کا دورہ کیا جس سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں گرمجوشی آئی۔
وزیراعظم کے دورے کے بعد ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے پاکستان کا دورہ کیا۔ وزیراعظم نے ایران اور امریکہ کے درمیان معاملات کو افہام و تفہیم سے حل کرنے میں بھی اپنا کردار ادا کیا ہے۔ عندلیب عباس نے کہا کہ وزیر خارجہ کے خطاب کو نہ صرف ملکی بلکہ بین الاقوامی میڈیا نے بھی کوریج دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کے مسئلے پر پاکستان اپنا بھرپور سفارتی کردار ادا کر رہا ہے۔ پاکستانی کوششوں کی وجہ سے بین الاقوامی برادری نے اس تنازعہ کو سنجیدگی سے لیا ہے جس کا ثبوت 16 اگست کو سلامتی کونسل کے اجلاس اور اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل و انسانی حقوق کی تنظیموں اور میڈیا کے ردعمل سے آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کشمیر کاز کی حمایت کے لئے اپنی کوششیں جاری رکھے گا۔

موضوعات:

loading…